بیوی، سالی اور اس کے 2 بچوں کے قتل کا سزائے موت کا قیدی بری

0

سوہاوہ: لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بنچ کے جناب جسٹس راجہ شاہد محمود عباسی اور جناب جسٹس چوہدری عبدالعزیز نے تھانہ ڈومیلی کے علاقے میں گھریلو جھگڑے پربیوی، سالی اور اس کے دو بچوں کو آگ لگاکر قتل کرنے کے مشہور مقدمہ میں ٹرائل کورٹ سے ملزم کو دی گئی سزائے موت کالعدم قرار دے کر اسے بری کردیا۔

ملزم ارشد محمود کے وکیل راجہ غنیم عابر خان ایڈووکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ 11 مارچ2016 ء کو ملزم نے گھریلو جھگڑے پراپنی بیوی زاہدہ پروین،اپنی سالی سدرہ بی بی اوراس کے دو بچوں احسن اور رانیا کو آگ لگاکرقتل کردیا۔

ملزم کو جرم ثابت ہونے پرایڈیشنل سیشن جج سوہاوہ نے 9 جون2017 ء کو چار مرتبہ سزائے موت کا حکم سنایا جس کے خلاف ملزم نے عدالت عالیہ میں اپیل دائر کی جو چشم دید گواہ استغاثہ نے پیش کئے وہ موقع پر موجود نہیں تھے جبکہ ملزم سے پٹرول کی برآمدگی بھی فیک تھی۔

عدالت عالیہ کے ڈویژن بنچ نے دو طرفہ دلائل سننے کے بعد ملزم کو شک کا فائدہ دے کر اس کی سزائے موت ختم کرکے اسے بری کردیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.