جہلم

جہلم شہر کی سرکاری عمارتوں کی چھتوں پر لگے سائن بورڈز کے وزن سے چھتوں میں دراڑیں پڑنے لگیں

جہلم: شہر کے داخلی و خارجی راستوں اور سرکاری عمارتوں کی چھتوں پر لگے سائن بورڈز کے وزن کے باعث چھتوں میں دراڑیں پڑ گئیں، سائن بورڈز کسی بھی وقت سائن بورڈز گرنے سے جانی و مالی نقصان ہو سکتا ہے۔

شہر میں موجود سرکاری عمارتوں کی چھتوں پر لگے سائن بورڈز کے وزن سے چھتوں میں بھی دراڑیں پڑ چکی ہیں، سائن بورڈ کسی بھی وقت گر کر بڑے حادثے کا سبب بن سکتے ہیں، سائن بورڈز وزنی ہونے اور انتظامیہ کی نااہلی وجہ سے جن سرکاری عمارتوں کی چھتوں پر نصب ہیں ان میں دراڑیں پڑنا شروع ہو گئی ہیں۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے واضح احکامات جاری کر رکھے ہیں کہ سرکاری عمارتوں اور شہری کے چوک چوراہوں، سڑکوں کے اطراف سائن بورڈ نصب کرنے سے پرہیز کیا جائے تاکہ کسی قسم کا کوئی حادثہ رونما نہ ہو سکے۔ میونسپل کارپوریشن کی انتظامیہ اور این ایچ اے کی انتظامیہ سمیت کنٹونمنٹ بورڈ کی انتظامیہ نے سپریم کورٹ کے احکامات کو ہوا میں اڑاتے ہوئے دیو قامت ،بل بورڈز نصب کروا کر سپریم کورٹ کے احکامات کا مذاق اڑانا شروع کررکھا ہے۔

شہریوں نے چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع جہلم میں نافذ جنگل کے قانون کے خاتمے کے لئے از خود نوٹس لیتے ہوئے سرکاری عمارتوں سمیت شہر کے چوک چوراہوں اور جی ٹی روڈ کے دونوں اطراف لگے سائن بوڈز ہٹانے کے احکامات جاری کئے جائیں تاکہ شہری بلا خوف و خطر اپنی مصروفیات جاری رکھ سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button