جہلم

یکساں نصاب تعلیم؛ سکولز مالکان نے والدین کو دوبارہ کتابیں خریدنے کے نوٹس تھما دیئے

جہلم: نجی سکولوں کے مالکان نے بھی نصاب کی تبدیلی پر عملدرآمد شروع کرنے کا عندیہ دے دیا، سکولز مالکان نے والدین کو دوبارہ کتابیں خریدنے کے نوٹس تھما دیئے، والدین 1 سال میں 2 دفعہ کتابیں خریدنے کی وجہ سے پریشان ہیں۔

اس حوالے سے شہریوں کا کہنا ہے کہ حکومت نے پرائیویٹ سکولز مالکان کو تحریری احکامات جاری کررکھے تھے کہ نصاب کی تبدیلی اگست سے ہوگی لیکن پرائیویٹ سکولز مالکان کی ہٹ دھرمی کیوجہ سے سکولز انتظامیہ نے زیر تعلیم بچوں کے والدین کو پرانا سلیبس خریدنے کے احکامات جاری کئے ، جب تعلیمی سرگرمیاں شروع کر دی گئیں تو اب دوبارہ نجی سکولز مالکان نے حکومت پاکستان کے مقررہ کردہ نصاب کے مطابق کتابیں خریدنے کے احکامات جاری کر رکھے ہیں۔

بچوں کے والدین کا کہنا ہے کہ سکول انتظامیہ نے جان بوجھ کر اپنی پرانی کتابیں فروخت کرنے کی غرض سے بچوں کے والدین کو کتابیں فروخت کیں اور محض چند ماہ بعد ہی بچوں کو حکومت کی جانب سے جاری کردہ نصاب کے مطابق کتابیں خریدنے کے احکامات جاری کر دیئے۔

حکومت کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے مطابق 2021ء کے تعلیمی سیشن میں پہلی سے پانچویں تک کے طلبا یکساں قومی نصاب کے تحت شائع ہونے والی کتابیں ہی پڑھیں گے، والدین کی اکثریت تو اس بات سے واقف نہ تھی کہ نیا یکساں قومی نصاب نافذ کرنے کا کوئی فیصلہ ہو چکا ہے اس لیے سکول مالکان آسانی کے ساتھ نصاب کی تبدیلی کا الزام حکومت پر ڈال کر سال کے وسط میں نئی کتب خریدنے کا کہہ رہے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button