ضلع جہلم میں شدید گرمی کی لہر جاری، پارا 47 ڈگری سینٹی گریڈ تک جا پہنچا

0

دینہ: گرمی کی شدت ، آگ برساتی لو کے باوجود شہریوں کو درختوں کی اہمیت سمجھ نہ آئی، بارش کے دعائیں مانگتے مولوی بھی درختوں بارے کوئی بیان نہ دے سکے۔

ضلع جہلم میں درختوں کی اندھا دھند کٹائی اور ہر طرف کنکریٹ کے پلازے کھڑے ہو جانے کے باعث گرمی کی شدت میں بھی گزشتہ ایک عشرہ کے دوران زبردست اضافہ ہوا ہے اور گزشتہ دو سال سے ضلع جہلم میں درجہ حرارت 47 ڈگری تک پہنچ جاتا ہے اس کے باوجود ضلع جہلم میں درخت لگانے کی اہمیت سے آگاہی شہریوں کو حاصل نہیں ہو سکی۔

گرمی سے بچنے کیلئے ائیر کنڈیشنر، نہروں کا رخ کرنا اور دیگر اقدامات تو کئے جاتے ہیں لیکن کوئی شخص درخت لگانے پر تیار نہیں۔

سماجی تنظیموں کی جانب سے جی ٹی روڈ گرین بیلٹ پر لگائے گئے سینکڑوں پودے پانی نہ ملنے کی وجہ سے تبا ہ ہو رہے ہیں شہر کی تقریبا تمام ہی مساجد میں مولوی حضرات ہر نماز کے بعد بارشوں کی دعا تو مانگتے نظرآتے ہیں لیکن نمازیوں کو درخت لگانے بارے آگاہی دینے کی زحمت نہیں کی جاتی۔

گرمی کی شدت سے نہ صرف شہری بڑی تعداد میں بیمار ہو رہے ہیں بلکہ صبح نو بجے سے شام پانچ بجے تک معمولات زندگی تقریبا معطل ہو کر رہ جاتے ہیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.