سول ہسپتال جہلم میں لیبارٹری ٹیسٹوں کی فیسوں میں غیر معمولی اضافہ، شہری سراپا احتجاج

0

جہلم: حکومت کی سرپرستی میں شہریوں سے صحت کی سہولت چھیننے اور بھاری ٹیکسوں کے نفاذ کے لئے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے بعد ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں لیبارٹری ٹیسٹوں کی فیسوں میں غیر معمولی اضافے پر شہری سراپا احتجاج، لیبارٹری ٹیسٹوں کی فیسیں بڑھنے سے خط ِ غربت سے نیچے زندگی گزارنے والے عوام علاج و معالجہ سے محروم ہوگئے ، سرکاری ہسپتالوں نے بھی لیبارٹری کے ٹیسٹوں کی فیسوں میں غیر معمولی اضافہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق پرائیویٹ لیبارٹریوں کی جانب سے لیبارٹری ٹیسٹوں کی فیسوں میں 2 سو فیصد اضافے سے عوام شدید مشکلات کا شکار ہو گئی تھیں۔

حکومت نے اقتدار میں آنے سے قبل صحت اور تعلیم میں خصوصی اصلاحات اور تبدیلی کا عزم کیا تھا، لیکن اقتدار کو ایک سال مکمل ہونے کے بعد صحت کے شعبہ میں بہتری اور ترقی تو نظر آئی لیکن سرکاری ہسپتالوں میں لیبارٹری ٹیسٹوں کی فیسیں بڑھانے کا باقاعدہ نوٹیفیکیشن الیکٹرانک میڈیا پرگردش کر رہا ہے اور سرکاری ہسپتالوں کی انتظامیہ نے ٹیسٹوں کے نرخ بڑھا دیئے ہیں۔

سرکاری لیبارٹریوں میں فیسیں بڑھنے سے غریب لوگ علاج سے یکسر محروم ہوکر رہ گئے ہیں اور شہری اس صورتحال سے صحت کی سہولت حاصل کرنے سے محروم ہو جائیں گے ، حکومت کی جانب سے مسلسل چشم پوشی اور بااثر مافیا کی جانب سے فوری مہنگائی کی پالیسی پر عوام سخت پریشان ہیں۔

ٹیسٹ فیسوں کی شرح میں اضافہ سے عوام نے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے غریب دشمن پالیسی قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ عوام پہلے ہی مہنگائی کی چکی میں پس رہی ہے اور اسے ریلیف دینے کی بجائے سستے علاج کی سہولت بھی چھین لی گئی ہے ، وزیر اعظم عمران خان نے انتخابات سے پہلے عوام سے جو وعدے کئے تھے وہ پورے کرنے کی بجائے عوام پر آئے روز مہنگائی کے ڈرون گرائے جارہے ہیں۔

شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ سرکاری ہسپتالوں میں ٹیسٹ فیسوں کی شرح میں اضافہ کا نوٹیفیکیشن واپس لے کر عوام کو ریلیف فراہم کیا جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.