جہلم

جہلم میں بغیر روٹ پرمٹ گاڑیاں پبلک ٹرانسپورٹ چلنے لگیں، مسافر ذلیل ہو کر رہ گئے

جہلم: متعلقہ حکام کی فرائض سے چشم پوشی بغیر روٹ پرمٹ گاڑیاں پبلک ٹرانسپورٹ چلنے لگیں، مسافر ذلیل ہو کر رہ گئے۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر سے دیگر روٹس پر چلنے والی ٹرانسپورٹ میں اکثریت ان گاڑیوں کی ہے جو دینہ، میرپور، چکوال، پنڈدادنخان سمیت اندرون ضلع چلنے والی ویگنوں ، ہائی ایسسز کی ہیں ، سیکرٹری آر ٹی اے اور موٹر وہیکل ایگزامینر کی فرائض سے چشم پوشی کی وجہ سے جہلم تا پنڈدادنخان کی سواریاں گاڑیوں میں سوار کرکے کرایہ وصول کر لیا جاتا ہے۔

سٹاپ سے پہلے ہی سواریوں کو اترجانے کا حکم دیا جاتا ہے، سواریوں سمیت بچے،خواتین اور بوڑھے سٹاپ سے قبل اتارے جانے کیوجہ سے ذلیل وخوار ہوتے دکھائی دیتے ہیں۔

یہاں قابل ذکر بات یہ ہے کہ مسافروں کو پنڈدادنخان کے لئے گاڑیوں میں سوار کیا جاتا ہے اور جلالپور شریف، مصری موڑ، پنڈی سید پور، اس لئے اتار دیا جاتا ہے کہ آگے کی سواریاں موجود نہیں اس طرح خواتین بچے اور معمر شہری ٹرانسپوٹروں کے جھانسے میں آکر جنگلوں میں اتر کر پیچھے سے آنے والی گاڑیوں کا انتظار کرتے ہیں، بیشتر گاڑیاں ایسی ہیں جن کے پاس نہ تو روٹ پرمٹ ہے اور نہ ہی مکینکل طور پر فٹ ہیں۔

موٹر وہیکل ایگزمینر اور آر ٹی اے سیکرٹری کی عدم دلچسپی کیوجہ سے ضلع جہلم میں جنگل کا قانون نافذ ہے، مسافروں نے وزیرا علیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ جہلم میں فرض شناس، ایماندار افسران کو تعینات کیا جائے تاکہ لاقانونیت کا خاتمہ ممکن ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button