دینہ

دینہ کو عرصہ دراز سے تحصیل کا درجہ دیا گیا مگر بنیادی سہولیات نہ ہونے سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا

دینہ کو عرصہ دراز سے تحصیل کا درجہ دیا گیا مگر بنیادی سہولیات جودیشنل کمپلیکس کی عدالتیں، ڈی ایس پی اور محکمہ واپڈا کا ریوینو آفس دینہ میں نہ ہونے کی وجہ سے لوگوں کو 16 کلو میٹر کا سفر طے کر کے جہلم جانا پڑتا ہے ،عوام ذلیل و خوار ہو رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق دینہ کو عرصہ دراز سے تحصیل کا درجہ تو دے دیا گیا ہے مگر دینہ میں جوڈیشنل کمپلیکس، ایڈیشنل سیشن جج، سول جج، ڈی ایس پی، ریوینو آفس نہ ہونے کی بناء پر عوام ذلیل و خوار ہو رہی ہے عوام کو دینہ سے 16 کلو میٹر کا سفر طے کرکے جہلم جانا پڑتا ہے اسی طرح تحصیل دینہ کے وکلاء کی کافی تعدا کو دینہ سے جہلم جانا پڑتا ہے۔

دینہ کی عوا م کا دیرینہ مطالبہ ہے کہ دینہ میں فوری طور پر جوڈیشنل کمپلیکس بنایا جائے عوام نے ارباب اختیار سے دینہ میں دفاتر قائم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button