انبیاء کرام کی بعثت کا مقصد کرہ ارض پر موجود طاغوتی قوتوں کا قلع قمع کرنا تھا۔ علامہ فیاض بشیر قادری

0

پڑی درویزہ: انبیاء کرام کی بعثت کا مقصد کرہ ارض پر موجود طاغوتی قوتوں کا قلع قمع کرنا تھا۔ تخلیق انسان کا مقصد بھی درد انسانیت ہی ہے ، قرآن پاک میں ایسے واقعات موجود ہیں جن سے سبق ملتا ہے کہ تخلیق انسان کا اصل مقصد صرف اور صرف مستحق انسانوں کی حقوق کی بازیابی کے لیے طاغوتی قوتوں کا مقابلہ کرنا اور حتیٰ کہ ان کے تختوں کو الٹا دینا ہے ۔

ان خیالات کا اظہار ادارہ منہاج القرآن پاکستان کے بانی و سرپرست اعلیٰ ممتاز دینی محقق ڈاکٹر طاہرالقادری کے شاگرد رشید علامہ فیاض بشیر قادری نے منہاج القرآن پڑی درویزہ کے زیر اہتمام منعقدہ درس قرآن کی محفل سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مہمان خصوصی فیاض بشیر قادری نے اپنے درسی خطاب میں کہا کہ تخلیق انسان کا مقصد استحصال زدہ انسانیت کے حقوق کی بازیابی کے لیے کر ہ ارض پر موجود طاغوتی قوتوں کا مقابلہ کر کے انکے تختوں کو الٹ کر قلع قلمع کرنا ہے ۔

اس سلسلے میں انہوں نے قرآن کریم میں موجود سورۃ القلم کی آیت نمبر 18تا 28میں بیان کردہ یمن کے مشہور تاجر کا واقع اور سورۃ طحہٰ کی آیت نمبر 25سے 34تک موجودحضرت موسیٰ علیہ السلام کے متعلق مشہور واقعات کی مثالیں پیش کیں ۔دونوں واقعات سے ثابت ہوتاہے کہ انبیاء کرام کی بعثت کا اصل مقصد ہی دکھی اور استحصال زدہ انسانیت کے حقوق کی پامالی کو روکنے کے لیے دنیا میں موجود طاغوتی قوتوں کا خاتمہ ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ُملا اور صوفی میں بڑا فرق ہی سرمایہ دارنہ فکر کا ہے روایتی ُملا دین کو فروخت کرتا ہے جبکہ صوفی دین کے علم کو بلا معاوضہ تقسیم کرتا ہے ۔درس قرآن کے اختتام پر مفرجات کا اہتمام کیا گیا ۔

یاد رہے کہ یہ جلسہ جامع مسجد انوار مدینہ پڑی درویزہ میں منعقد ہوا اور صدارت منہاج القرآن پڑی درویزہ کے سرپرست اعلیٰ ہومیو ڈاکٹر محمد سلیم نے کی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.