دینہ

دینہ کے قریب دریائے جہلم کے مقام پر کریش مشینوں اور ڈمپروں نے تباہی پھیلا دی

دینہ: ضلعی انتظامیہ کی غفلت، سستی اور کاہلی، دینہ کے قریب دریائے جہلم کے مقام پر کریش مشینوں اور ڈمپروں نے تباہی پھیلا دی، منگلا ڈیم کی بنیادوں کو کھوکھلا کیا جانے لگا، سڑکیں تباہ، علاقے کے مکینوں کا سکون غارت، منگلا ڈیم کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کا خدشہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق اس وقت ضلع جہلم کی تحصیل دینہ میں دریائے جہلم میں اس وقت کئی کریش مشینیں کام کر رہی ہیں، یہ کریش مشینیں دریائے جہلم منگلا ڈیم سے پتھروں سے بجری بنا کر اور ریت دوسرے علاقوں میں ڈمپروں کے ذریعے بھیج رہی ہیں۔

مذکورہ سینکڑوں ڈمپر صبح و شام ریت پتھر،بجری اٹھانے میں مصروف ہوتے ہیں، چند پیسوں کی لالچ میں منگلا ڈیم کو شدید نقصان پہنچا سکتے ہیں، صرف منگلا ڈیم کو نقصان نہیں ہوگا بلکہ ان ڈمپروں کی وجہ سے ضلع جہلم کی سڑکیں تباہ ہو گئی ہیں، ہر سال کثیر رقم لگا کر سڑکوں کی مرمت کی جاتی ہے۔

بلاشبہ مذکورہ ڈمپروں کی وجہ سے مکینوں اور راہگیروں کا سکون تباہ ہو گیا ہے، عرصہ چھ ماہ میں ان ڈمپروں کی وجہ سے 9 نوجوان حادثات کا شکار ہو کر اللہ کو پیارے ہو چکے ہیں، سوال پیدا ہوتا ہے کہ ان کی پشت پناہی کون کرتا ہے۔ سماجی زعماء دینہ نے ڈپٹی کمشنر جہلم سے اپیل کی ہے کہ وہ قانون کو حرکت میں لا کر ان کے خلاف ایکشن لیں تاکہ ملکی نقصان نہ ہو۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button