لاغر، بیمار، نیم مردہ اور مردہ جانوروں کے مضر ِ صحت گوشت کو سرِعام فروخت کیا جا نے لگا

0

جہلم: شہر او ر گردونواح میں کرپٹ اور بد عنوان اہلکاروں کی بے ایمانی اور عوام دشمنی کے باعث شہر کے درجنوں مقامات پر لاغر، بیمار ، نیم مردہ اور مردہ جانوروں کے مضر ِ صحت گوشت کو سرِ عام فروخت کیا جا نے لگا ۔شہری صحت افزا گوشت دستیاب نہ ہونے پر سراپا احتجاج ۔ ڈپٹی کمشنر سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اندرون شہر سمیت شہر کے مختلف علاقوں کالا گجراں، بلال ٹاؤن، ویسٹ کالونی، چونترہ، کھرالہ، مجاہدہ آباد ، چک خاصہ،سعیلہ سمیت متعدد علاقوں میں لاغر ، نیم مردہ ، اور بیمار مردہ جانوروں کے گوشت کا کارروبار کرنے والے مافیا نے اپنے اپنے علاقوں کے اندر منی سلاٹرہاؤسز کھول رکھے ہیں۔

مافیا جانوروں کو ذبح کرتے وقت جانوروں کے دل کی مین نالی میں پانی کا پائپ لگا کر جانور کے جسم میں پانی پریشر سے بھر دیتے ہیں جس سے گوشت کے وزن میں غیر معمولی اضافہ ہو جاتا ہے۔

پانی ملے گوشت کا ذائقہ تبدیل ہو جاتا ہے اور پانی ملا گوشت انسانی صحت کے لئے انتہائی مضر ِ صحت بتایا جاتا ہے۔ جس کے استعمال سے شہری خطرناک موذی امراض کا شکار ہورہے ہیں۔

باوثوق ذرائع کے مطابق بیمار نیم مردہ جانور مختلف پہاڑی علاقوں اور منڈیوں سے نہایت کم نرخوں پر خرید کر لائے جاتے ہیں۔ بااثر مافیا اہلکاروں کو نذرانے ، اور منتھلیاں دے کر اہلکاروں کی آنکھوں پر پٹی باندھ دیتے ہیں۔

اس بات کا بھی انکشاف ہوا ہے۔ کہ پیدائش کے وقت مر جانے والے بچھڑوں کا گوشت بھی ہوٹلوں وغیرہ پرچھوٹا گوشت بنا کر فروخت کیا جاتا ہے۔مخدوش صورتحال پر شہر اور گردونواح میں شہری سراپا احتجاج ہیں۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ گوشت کے معیار کو بہتر بنانے کے لئے گرینڈ آپریشن کروایاجائے اور گوشت کے کاروبار میں بددیانت اور کرپٹ مافیا اور ان کی پشت پناہی کرنے والوں کو کیفرے کردار تک پہنچایا جائے تاکہ شہری حفظان صحت کے اصولوں کے عین مطابق گوشت استعمال کر کے بیماریوں سے محفوط رہ سکیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.