جہلم

طلباء و طالبات سے ناجائز فیسوں کی وصولی اور دیگر بدعنوانیوں پر محکمہ تعلیم نے چپ سادھ لی

جہلم: ڈی او کالجز کی عدم دلچسپی ،پرائیویٹ کالجز کی انتظامیہ کی من مانیاں عروج پر،طلباء و طالبات سے ناجائز فیسوں کی وصولی اور دیگر بدعنوانیوں پر محکمہ تعلیم نے چپ سادھ لی،شہریوں کا وزیراعلیٰ پنجاب ،وزیر تعلیم اور وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی چوہدری فو اد حسین سے اصلاح احوال کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ضلع جہلم میں درجنوں سے زائد پرائیویٹ کالجز نے داخلوں اور فیسوں کی مد میں من مانا اضافہ کرکے لوٹ کھسوٹ کا بازار گرم کررکھا ہے ،کالجز میں داخلوں کے سلسلے میں حکومتی ہدایات کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے اپنی الگ ریاست قائم کررکھی ہے۔

گورنمنٹ کالجز میں کم نشستیں ہونے کے باعث پرایؤیٹ کالجز میں داخلے کے خواہشمند طلباء و طالبات نجی کاروباری تعلیمی اداروں کے رحم و کرم پر داخلے حاصل کرتے ہیں جہاں ان سے کئی گنا اضافی فیسیں وصول کرکے طلباء و طالبات کے ساتھ کھلواڑ کیا جاتا ہے ۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ نجی تعلیمی اداروں میں انتظامیہ کی سرپرستی کیوجہ سے اکثر و بیشتر طلباء نشے کے عادی مجرم بن جاتے ہیں ، نجی تعلیمی اداروں کے اندر موبائل فونز کا استعمال اور سیگریٹ نوشی بطور فیشن بن چکا ہے ۔

شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب، وزیرا تعلیم ، وفاقی وزیر سائنس اینڈٹیکنالوجی فواد حسین چوہدری سے مطالبہ کیاہے کہ نجی تعلیمی اداروں کی انتظامیہ کے لئے ایس او پیز پر عملدرآمد کروانے کا پابند بنایا جائے تاکہ نجی کالجز میں نافذ جنگل کے قانون کا خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button