دینہ

عبادات کا اجر گنتی سے نہیں بلکہ اس بات پر ہے کہ اس کی ادائیگی کتنے خلوص سے کی گئی ہے۔ امیر عبدالقدیر اعوان

دینہ: عبادات کا اجر گنتی سے نہیں بلکہ اس بات پر ہے کہ اس کی ادائیگی کتنے خلوص سے کی گئی ہے آج اگر کوئی اُحد پہاڑ جتنا سونا اللہ کی راہ میں دے اور ایک صحابی ؓ ایک مُٹھ جَو اللہ کی راہ میں خرچ کریں تو اجر کے لحاظ سے سونے پر بھاری ہوں گے کیو نکہ نیت اور اخلاص غیر صحابی کا صحابی کے برابر ہونہیں سکتا۔

ان خیالات کا اظہار امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ و سربراہ تنظیم الاخوان پاکستان کا جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ ذکر قلبی ان کیفیات کے حصول کے لئے اختیار کیا جاتا ہے جوکہ قلب اطہر محمد الرسول اللہ ﷺ سے آرہی ہیں اور یہی وہ کیفیات ہیں جو بندہ کے قلب کے اندر وہ خلوص پیدا کرتی ہیں جو کہ ہر نیکی کی بنیاد ہے اور یہ کیفیات ایک تسلسل کے تحت آرہی ہوتی ہیں اور آگے تقسیم ہورہی ہوتی ہیں۔ اگر کوئی اس سے منسلک ہوئے بغیر چاہے کہ یہ حاصل ہو جائیں تو یہ ممکن نہ ہوگا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button