جہلم

پرچون سطح پر19 ویں روزے کو بھی گراں فروشوں کی من مانیاں جاری رہیں

جہلم: پرچون سطح پر19 ویں روزے کو بھی گراں فروشوں کی من مانیاں جاری رہیں ، سرکاری نرخنامے میں متعدد سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں کمی کے باوجود دکانداروں کی جانب سے گراں فروشی کا رجحان بغیر کسی تعطل کے جاری رہا ، شہر سمیت ملحقہ آبادیوں میں صارفین اور دکانداروں میں قیمتوں کے معاملے پر توں تکرارجاری رہا، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غائب رہے ، شہریوں کا وزیراعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق آج قیمت پنجاب ایپ میں پرچون سطح پر آلو نیا درجہ اول کا سرکاری نرخنامے میں قیمت38 روپے مقرر کی گئی ، تاہم دکانداروں نے 50 روپے تک فروخت جاری رکھی ، پیاز درجہ اول 21 روپے کی بجائے 30 سے 35 روپے ، ٹماٹر درجہ اول 30 کی بجائے 40 روپے ، لہسن دیسی110 کی بجائے 150 روپے تک فروخت کیا گیا۔

ادرک تھائی لینڈ 280روپے کی بجائے320 روپے ، شملہ مرچ 22 روپے کی بجائے 55 سے 60 روپے ، سبز مرچ اول 35 کی بجائے 50 روپے ، لیموں چائنہ280 روپے کی بجائے 300 روپے فی کلو فروخت کیا گیا، پھلوں میں سیب کالا کولو پہاڑی اول180 روپے کی بجائے 230 روپے تک فروخت کیا گیا۔

سیب کالا کولو پہاڑی دوم150 کی بجائے 190 سے 200 روپے ، کیلا درجہ اول 185 کی بجائے230 روپے ،کیلا فی درجن دوم130 کی بجائے 150 ، سٹرابری دوم 90 روپے کی بجائے 100 روپے، کھجور ایرانی اول 220 کی بجائے 250 ، خربوزہ 65 کی بجائے 100روپے ، گرما 70 کی بجائے 130 ، انار قندھاری 290 کی بجائے 350 ، تربوز20 کی بجائے 50 روپے تک فروخت کیا گیا۔

شہریوں کے وزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ سبزی منڈی اور شہر میں قیمتیں برقراررکھنے کے لئے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو ٹھنڈے کمروں سے باہر نکالنے کی ضرورت ہے تاکہ غریب سفید پوش طبقہ سے تعلق رکھنے والے افراد اپنے بچوں کو ماہ صیام میں اللہ کی جانب سے دی گئی نعمتوں سے اسیر ہوں سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button