دینہ

دینہ میں تفریحی پارک نہ ہونے کی وجہ سے عوام ذہنی بیماریوں کا شکار ہونے لگے

دینہ: تحصیل دینہ میں عوام کے لیے کسی بھی قسم کا تفریحی پارک موجود نہیں ،عوام ذہنی بیماریوں کا شکار ہونے لگے ،صحت کے حوالے سے واک یا پُر فضا ماحول کے لیے پارک کا ہونا بہت ضروری ہے،بچے بھی تفریحی سہولیات سے محرومی کا شکار ہونے کے ساتھ ساتھ منفی سرگرمیوں کی طرف راغب ہو رہے ہیں جوعوامی نمائندوں کے ساتھ ساتھ انتظامیہ کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے،عوام الناس کا ڈپٹی کمشنر جہلم سے اس حوالے سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق دینہ کو تحصیل کا درجہ تو دے دیا گیا لیکن یہ بنیادی ضروریات زندگی سے محروم شہر ہے ،تفریح کے حوالے سے شہر میں کسی قسم کا کوئی پارک موجود نہیں جہاں لوگ فیملی کے ساتھ جا کر وقت گزار سکیں یا صحت کے حوالے سے واک کر سکیں ،تحصیل دینہ شہر کی آبادی دو لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے اور عوام گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں جس نے عوام کو ذہنی مریض بنا کر رکھ دیا ہے۔

تفریحی سہولیات کے حوالے سے بچوں کے لیے بھی کوئی موزوں جگہ یا پارک نہیں جہاں وہ اپنی تفریحی سرگرمیاں سر انجام دیں سکیںجس کی وجہ سے شہر کے اکثر بچے منفی سرگرمیوں میں ملوث ہوتے جا رہے ہیں ،منشیات کا استعمال عام ہوتا جا رہا ہے جس کی روک تھام کے لیے بچوں کے لیے مثبت سرگرمیوں کے لیے تفریحی پارک کا ہونا بہت ضروری ہے ،خواتین کے لیے پارک کی سہولت نہ ہونے کی وجہ سے وہ گھروں میں محصورہو کر رہ گئی ہیں۔

اس حوالے سے تحصیل دینہ کے عوامی نمائندے اور انتظامیہ ناکام دکھائی دیتے ہیں اور کسی نے بھی آج تک اس طرف توجہ نہیں کی ہے،دینہ شہر کی خوبصورتی کے لیے بھی پارک کا ہونا ضروری ہے۔

عوام الناس نے ڈپٹی کمشنر جہلم کیپٹن ریٹائرڈ عبدالستار رعیسانی سے یہ توقعات وابستہ کی ہیں کہ وہ اس مسئلہ کا فوری نوٹس لیں گے اور دینہ کی عوام کے لیے حکومت پنجاب سے پارک کے لیے جگہ کی منظوری میں اہم کردار ادا کریں گے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button