جہلماہم خبریں

وزیراعظم پاکستان عمران خان کے قوم سے کئے گئے وعدے وفا نہ ہوسکے

جہلم: وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے قوم سے کئے گئے وعدے وفا نہ ہوسکے ،وزیراعظم انتخابات سے قبل کہا کرتے تھے کہ ملک میں کوئی غریب نہیں رہے گا، بات سچی ثابت ہونا شروع ہو چکی ہے ، غربت سے تنگ افراد خودکشیاں کر کے غریبی ختم کرنے لگے ۔ غریب سفید پوش طبقہ سراپا احتجاج ، چیف جسٹس آف پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق عوام کو الیکشن سے پہلے سہانے سپنے دکھا کر پاکستان تحریک انصاف نے عام آدمی سے 2 وقت کی روٹی بھی چھین لی ہے ، آٹا، چینی، بجلی گیس، ادویات سمیت دیگر اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے سے ہر طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد مشکلات کا شکار ہیں۔

حکومت کی نااہلی سے پیدا ہونے والی مہنگائی اور بے روزگاری نے غریب ، سفید پوش طبقہ کے افراد کی چیخیں نکال دی ، عوام پر مسلط ہونے والے حکمرانوں نے ملکی معیشت کو تباہ و برباد کرکے رکھ دیاہے ، نواز شریف چور، زرداری چور، سابق حکمران سارے ٹیکس چور ہیں کی باتیں سن سن کر عوام بیزار ہوچکی ہے ، غریب عوام حکومت کے خاتمے کے لئے جھولیاں اٹھا اٹھا کر دعائیں مانگ رہے ہیں ، پی ٹی آئی کو ووٹ دینے والے حکومت کے جانے کے دن گن رہے ہیں۔

عوام کا کہنا ہے کہ ریاست مدینہ کا نام لیکر عوام کو مہنگائی کی چکی میں پیسا جا رہاہے ، جتنی مہنگائی تبدیلی سرکار کے دور میں ہوئی ہے اس کی مثال ماضی میں نہیں ملتی ، روزانہ کی بنیاد پر مہنگائی ہونا حکومت کی ناکامی اور حکومتی مشینری کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے ، غریب مہنگائی کی چکی میں بری طرح پس رہے ہیں ، ان کا کوئی پرسان حال نہیں۔

عوام کا کہنا ہے کہ حکومت نے اقتدار میں آنے سے پہلے عوام کو نیا پاکستان دینے کا وعدہ کیا تھا ایک ایسا خوشحال پاکستان جہاں پر غربت ہوگئی ، نہ مہنگائی ہوگی ، مگر آج تبدیلی سرکار نے مہنگائی کے تمام پرانے ریکارڈ توڑ کر نئے بنا ڈالے ہیں ،وزیر اعظم عمران خان کو اب ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی پر بھی یوٹرن لینا ہوگاورنہ عوام کا سیلاب سڑکوں پر نکل آئے گا، احتجا ج کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ بھی شروع ہو سکتا ہے ، اور وہ وقت زیادہ دور نظر نہیں رہا کہ عمران خان اور ان کی حکومت اپنی کمزور اور ناقص پالیسیوں کیوجہ سے عوامی حمایت سے محروم ہو جائے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button