جہلماہم خبریں

الیکشن میں سانحہ ماڈل ٹاؤن کے شہداء کے انصاف اورنظریہ کی حمایت کی۔ سید ابرار حسین شاہ

جہلم: ہم نے کسی فر د یا جماعت کا ساتھ نہیں دیا، سانحہ ماڈل ٹاؤن کے شہداء کے انصاف اورنظریہ کی حمایت کی، عام انتخابات کا بڑا اور تاریخی میلہ اختتام پذیر ہو گیا ۔جس میں تاریخی تاثراس لئے دیا جا رہا ہے کہ حالیہ عام انتخابات میں قوم نے پہلی بار آزاد قوم کی حیثیت سے ووٹ کاسٹ کیا ۔جس میں بڑے اور منظم منشور کے ساتھ قوم نے پاکستان تحریک انصاف کے حق میں فیصلہ سنا دیا ۔

ان خیالات کا اظہار سید ابرارحسین شاہ ضلعی صدر عوامی تحریک جہلم نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کی طرح جہلم میں بھی تحریک انصاف بھاری اکثریت سے کامیاب ہوئی بلکہ کامیابی کے ساتھ بڑی اہم بات یہ کہ پاکستان تحریک انصاف نے جہلم کی تاریخ میں پہلی بار کلین سویپ کا ریکارڈ بھی اپنے نام کیا ۔بالخصوص این اے 67 میں کم و بیش 37 سال بعد فرسودہ محرومیوں کی سیاست کو شکست دی ۔کامیابی بھی تن تنہا ممکن نہیں ہو سکتی ۔اس کے لئے پاکستان عوامی تحریک نے اہم کردار ادا کیا ۔

اہم سماجی حلقوں کا کہنا ہے کہ عوامی تحریک کا منظم ووٹ بنک نے تحریک انصاف کی کا میابی میں قلیدی کردار ادا کیا ۔اس میں پاکستان عوامی تحریک کے امیدوار برائے حلقہ این اے 67 ،پی پی 26 جہلم سید ابرارحسین شاہ نے وسیع تر عوامی مفادات اور سانحہ ماڈل شہداء کے انصاف کے لئے الیکشن سے دستبردار ہونے کا فیصلہ کیا ۔عوامی تحریک اور تحریک منہاج القرآن نے مشترکہ طور پر نہ صرف حمایت کی بلکہ تحریک انصاف کی انتخابی مہم بھی بھرپور انداز میں چلائی۔اتفاق میں اللہ نے ایسی برکت دی کہ جہلم میں تحریک انصاف نے کلین سویپ کیا۔

اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے تو جشن منایا گیا۔اس کے ساتھ سید ابرارحسین شاہ کے مرکزی آفس طورمیں تحریک انصاف کی فتح کا جشن بھرپور انداز میں منانے کا سلسلہ تاحال جاری ہے۔گزشتہ روز پاکستان عوامی تحریک اورتحریک منہاج القرآن یونین کونسل سنگھوئی کی جانب سے سید ابرارحسین شاہ کے اعزازمیں خصوصی عشائیہ کا اہتمام کیا گیا ۔جس میں عوامی تحریک ،منہاج القرآن کے کارکنان ،عہدیداران کی بڑی تعداد کے علاوہ تحریک انصاف کے کارکنان نے بھی شرکت کی ۔

اس موقع پر سید ابرارحسین شاہ (ضلعی صدر عوامی تحریک جہلم )نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن اور وسیع تر عوامی مفادات میں دستبرداری اور تحریک انصاف کی بھرپور سپورٹ کا فیصلہ کیا۔علاقہ سے کئی دہائیوں سے قائم فرسودہ اور محرومیوں کی سیاست کا خاتمہ ہوا ،جس سیاست کو اسمبلیوں میں عوامی کے لئے بولنے کی زحمت تک گوارا نہ کی ۔ہم نے کسی ایک جماعت فرد یا روائیتی نظام کو نہیں بلکہ پاکستان تحریک انصاف اور عمران خان کے نظریہ کو سپورٹ کیا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے کارکنان نے پی ٹی آئی سے کئے اتحاد کے وعدے وفا اور اتحادی ہونے کا حق ادا کیا ۔میں نے میری جماعت نے جو فیصلہ کیا اس پر کوئی پچھتاوا ہے نہ کو ئی ملال ۔کوئی اگر اس کو لین دین سمجھتا ہے تو یہ ہمارا مسئلہ نہیں ہمارا ضمیر مطمئین ہے ہم سانحہ ماڈل ٹاؤن کے شہداء کے قصاص تک اپنی آئینی جدوجہد جاری رکھیں گے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button