جہلم

مضر صحت پان، مصالحوں، نشہ آور گٹکا، شیشہ نما سیگریٹ اور غیرمعیاری سپاریوں کی فروخت دھڑلے سے جاری

جہلم: شہر اور گردونواح میں مضر صحت پان ، مصالحوں ، نشہ آور گٹکا ، شیشہ نما سیگریٹ اور غیر معیاری سپاریوں کی فروخت دھڑلے سے جاری، بگڑے رئیس زادوں سمیت بچوں کی بڑی تعداد مہلک امراض میں مبتلا ہونے لگے، پان کی دکانوں پر غیر ملکی درآمد شدہ اور کیمیکل سے تیار کردہ ، اشیاء کے بے دریغ استعمال سے والدین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔

تفصیلات کے مطابق شہر کے گلی محلوں سمیت نواحی و مضافاتی علاقوں میں پان سیگریٹ فروخت کرنے والی دکانوں ،اور گولی ٹافی کی دکانوں پر نشہ آور پان ،گٹکا ، غیر معیاری پان مصالحے ، سپاریاں ، شیشہ نماسیگریٹ جو کہ مبینہ طور پر بڑے گھرانوں کے بگڑے رئیس زادے شوقیہ استعمال کرتے ہیں جنہوں نے معصوم بچوں کو ورغلا کر اپنی سوسائٹی کاحصہ بنا لیا ہے کو خطرناک کیمیکل اور دیگر مضر صحت اشیاء سے تیار کی جاتی ہیں۔

چھوٹے پیکٹوں ، پڑیوں ، اور ڈبو ںمیں فروخت ہونے سمیت مختلف اقسام و برانڈ کے پان تمباکو ، سپاری ، چھالیہ کی سرعام فروخت جاری ہے جن میں کالا قوام ، پیلی پتی ، چندن ، زعفران ، کالا تمباکو، بنارسی ، راجہ رانی ، گرو300 ، پان پراگ ،ون ٹو ون وغیرہ شامل ہیں ، نوجوان لڑکے لڑکیوں بالخصوص کم عمر بچوں میں اس زہریلے نشے کا بڑھتا ہوا رجحان انتہائی خطرناک ہے۔

شہریوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ نشہ آور اشیا ء فروخت کرنے والے دکانداروں پر پابندی عائد کی جائے تا کہ نوجوان نسل نشے کی مہلک لت سے محفوظ رہ سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button