جہلماہم خبریں

پنجاب پولیس کی ’’بھوک‘‘ انتہا کو پہنچ گئی، جانورلے جانیوالی ہر گاڑی سے نوٹ بٹورنے لگے

جہلم: پنجاب پولیس کی ’’بھوک‘‘ انتہا کو پہنچ گئی، قربانی کے جانورخریدنے والے ٹارگٹ ، جہلم پل پر جانور لیجانے والی ہر گاڑی سے دو سے تین سو روپے بٹورنے لگے، شہریوں کا آئندہ سال زکوۃ، صدقات بھی پولیس ڈیپارٹمنٹ کو دینے کا اعلان۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب پولیس جو دنیا بھر میں کرپشن اور لوٹ مار کی وجہ سے بدنام ہے اور ہر طرح سے حرام خوری جس کی پہچان بن چکی ہے نے اب اپنی ازلی بھوک مٹانے کی خاطر قربانی کے جانور لے جانے والوں کو بھی نشانے پر رکھ لیا ہے ۔

کھاریاں ، لالہ موسی اورگجرات سے قربانی کے جانور خرید کر جہلم ، دینہ، میر پور لے جانے والی ہر گاڑی سے پل پر تعینات گجرات پولیس کے اہلکار دو سے تین سو روپے رشوت وصول کرتے ہیں اور رشوت دینے میں تاخیر کرنے والوں کو جانورسمیت تھانے بند کرنے کی دھمکیاں دیتے ہوئے گالیاں دینا شروع کر دیتے ہیں۔

جہلم پل پر تعینات گجرات پولیس کے ایک افسر نے بتایا کہ جو لوگ لاکھ ، ڈیڑھ لاکھ کا جانور خرید لیتے ہیں وہ دو چار سو روپے اہلکاروں کو دے جائیں تو کیا فرق پڑتا ہے شہریوں کا کہنا ہے کہ سنت ابراہیمی کی ادائیگی کیلئے بھی رشوت دئیے بغیر جانور گھر نہیں لائے جاسکتے ۔

پنجاب پولیس اتنی ہی غریب ہو گئی ہے تو آئندہ سال سے ہم اپنی زکوۃ ، صدقات بھی پولیس ڈیپارٹمنٹ کو دینے کو تیار ہیں تاکہ ان اہلکاروں کی غربت دور کی جاسکے اور افسران کے پیٹ بھر سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button