جہلم

جہلم میں بھی مہنگائی کا جن بے قابو، پرچون سطح پر گرانفروشی کا سلسلہ عروج پر

جہلم: شہر میں بھی مہنگائی کا جن بے قابو،پر چون سطح پر گراں فروشی کا سلسلہ عروج پر، سرکاری ریٹ لسٹ کو دکانداروں نے ماننے سے انکار کر دیا۔
سرکاری نرخنامے کے مطابق سبزیوں میں ایک کلو آلو نیا کچا چھلکا اول 56روپے کی بجائے 65روپے ،ایک کلو پیاز درجہ اول 50روپے کی بجائے60 روپے،ٹماٹر درجہ اول 34روپے کی بجائے 50روپے تک فروخت کی گئی
لہسن دیسی 130روپے کی بجائے150روپے،ادرک چائنہ315کی بجائے 330روپے ،کھیرا دیسی36روپے کی بجائے 40روپے ،کھیرا فارمی15روپے کی بجائے 20روپے ،کریلے 29روپے کی بجائے35روپےتک فروخت کی گئی۔
پالک 21روپے کے بجائے 25روپے ، بینگن 17روپے کی بجائے 25روپے ،بندگوبھی 12روپے کی بجائے20روپے سے 40روپے ،پھول گوبھی41روپے کی بجائے50روپے ،سبز مرچ دیسی44روپے کی بجائے 50روپے ،شملہ مرچ 32روپے کی بجائے 50روپے ،گھیا کدو 18روپے کی بجائے 30روپےتک فروخت کی گئی۔
گھیا توری 38روپے بجائے 50روپے ،لیموں چائنہ245روپے کی بجائے 300روپے ،لیموں دیسی 300روپے کی بجائے 400روپے ،بھنڈی 73روپے کی بجائے 100روپے ،مٹر 100روپے کی بجائے 140روپے اور گاجر چائنہ 29روپے کی بجائے 40روپے کلو تک فروخت کی گئی ۔پرائس کنٹرول مجسٹریٹس شہریوں کو ریلیف مہیا کرنے کی بجائے دفتروں میں بیٹھ کر کاغذی کارروائیاں کرتے رہے۔
صارفین نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈپٹی کمشنر پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو روزانہ کی بنیاد پر سبزی ، فروٹ اور اشیاء خوردونوش کی دکانیں چیک کرنے کا پابند بنائیں اور گراںفروشی کے مرتکب دکانداروں کے خلاف سخت کارروائیاں کرنے کے احکامات جاری کریں تاکہ غریب ،سفید پوش، دیہاڑی دار طبقہ ماہ صیام کی برکتوں سے استفادہ حاصل کر سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button