جہلم

منہاج القرآن جہلم کے زیرِ اہتمام 10روزہ عرفان القرآن کورس کا اختتام، کانفرنس کا انعقاد

جہلم: تحریک منہاج القرآن جہلم کے زیرِ اہتمام 10روزہ عرفان القرآن کورس کی اختتامی تقریب، عرفان القرآن کانفرنس کا انعقاد،موجودہ دور میں ضرورت اِس بات کی ہے کہ دنیاوی علوم کیساتھ دینی علوم پر بھی توجہ دی جائے، یہ کورس اُسی سلسلہ میں ایک عظیم کام کے۔

پروفیسر سلیم احمد چوہدری،قرآن اور صاحبِ قرآن سے ٹوٹا ہوا رشتہ بحال کرنے کیلئے جہلم میں 120قرآن سکالرز تیار کئے گئے جو گلی محلوں میں قرآن کا فہم عام کریں گے۔ حافظ سعید رضا بغدادی،تحریک منہاج القرآن نے علمی سطح کا جو کام کر دیا ہے اِسکی مثال نہیں ملتی، باقی جماعتیں اعمال کو سنوارنے کا کام کر رہی ہیں۔ محمد محمود مسعود قادری،اُمت مسلمہ اور بالخصوص نوجوانوں کا قرآن کریم سے ٹوٹا ہوا تعلق بحال کرنے کا عظیم پرو جیکٹ عرفان القرآن کورس ہے۔ زین العابدین،اِس تقریب اور کورس کے مکمل انعقاد میں تمام انتظامیہ کے مشکور ہیں اور دلی مبارکباد دیتے ہیں۔ نوید احمد،14اگست ،27رمضان المبارک،نزولِ قرآن۔ جبکہ آج14اگست جہلم میں اِس عرفان القرآن تقریب کو بھی قرآن کی نسبت حاصل ہے۔ صفیہ رفعت

تفصیلات کے مطابق تحریک منہاج القرآن اور منہاج القرآن ویمن لیگ کے زیرِ اہتمام جہلم میں اپنی نوعیت کے پہلے پروگرام عرفان القرآن کورس برائے معلمین و معلمات 5اگست تا 14اگست 2018تک منعقد ہونے والے کورس میں 120مرد و خواتین کو علم التجوید و قرأت کیساتھ عربی گرامر کے تمام قواعد کا علم سکھاتا گیا جس سے نہ صرف تمام وہ قرآن کے اچھے قاری بلکہ قرآن کریم کا 80فیصد ترجمہ کرنے کے بھی قابل ہو گئے ہیں۔ اِن قرآن سکالرز کے ذریعے 120 سے زائد مقامات پر گلی محلوں میں عرفان القرآن اکیڈمیز کا آغاز کیا جائے جہاں یہی کورس عوام الناس کو بھی کروایا جائے گا۔

تقریب کی جہلم کی مشہور و معروف سیاسی ، سماجی،علمی و ادبی شخصیات نے شرکت کی جب میں چوہدری غلام احمد زمرد یعقوب سابق تحصیل ناظم جہلم، ملک وزیر خان ، پروفیسرملک پرویز اقبال، پروفیسرفرخ الزماں، عاشق حسین، پروفیسر زاہد حسین ساہی، پروفیسر وقار حیدر جعفری،پروفیسرڈاکٹر محمد انور،پروفیسرمحمد عمرفاروق، پروفیسراکرم مدنی،پروفیسراشفاق،پروفیسرامجد ہاشمی، پروفیسرضیاء الدین ، علامہ حافظ اظہر اقبال، علامہ مفتی محمد حماد ،قاری محمد یونس، قاری عمران الواحدی کے علاوہ وکلاء اور جہلم میلاد ٹیم کے وفد نے مرزا قیصر اشرف اور بلال خان کی قیادت میں شرکت کی۔

اس موقع پر عرفان القرآن کورس کے دو معلم اور معلمہ کو اظہارِ خیال کیلئے بلایا گیا جس میں اُن کا کہنا تھا کہ ہم جب پہلے دن آئے تو ہم اور آج ہم بالکل تبدیل ہو چکے اور ہم اپنے اساتذہ اور تحریک منہاج االقرآن کے شکر گذار ہیں کہ جنہوں نے اتنا اچھا پلیٹ فارم مہیا کیا اور عہد کیا کہ اِس علم کو خود تک محدود نہیں کریں گے بلکہ عوام الناس کو اِس عظیم زیور سے آراستہ کریں گے۔

پروفیسر عاشق حسین کا کہنا تھا کہ جس طرح سے اِس کورس کو ترتیب دیا گیا اور معلمین کو تیار کیا گیا یہ رہتی دُنیا تک سنہری حروف میں لکھا جاتا رہے گا اور حافظ سعید رضا بغدادی کو شہنشاہِ اساتذہ کا لقب دیتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ جس طرح کا طریقہ تدریس اِنکا ہے اگر اسی کو دیکھ لیا جائے تو ایسی مثال دُنیا میں کہیں نہیں ملتی۔

زین العابدین نے کہا کہ ضرورت اِس بات کی تھی اُمت مسلمہ اور بالخصوص نوجوانوں کو قرآن کی تعلیم کی طرف لایا جائے تا کہ قرآن اور صاحب قرآن سے ٹوٹا ہو تعلق بحال کر کے مکین گنبد خضرا کی طرف لوٹایا جا سکے جس پر نظامت تربیت نے ایک بہت ہی عظیم پروجیکٹ کو نچلی سطح پر منتقل کر کے بہت اعلیٰ قدم اُٹھایا ہے جس سے ہر فرد کی دہلیز پر یہ سہولت میسر آئی اور آج بہت سے نوجوان اِس کورس سے بہرہ ور ہوئے۔

محمود مسعود قادری نے تحریک منہاج القرآن جہلم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر طاہر القادری کی سربراہی میں جو کام علمی سطح کا تحریک نے کردیا ہے ایسا کام دُنیا کی کسی جماعت نے نہیں کیا یہ ہماری تحریک کا ہی خاصہ ہے کہ دوسری طرف جہاں اعمال کو سنوارنے کی بات کی جاتی ہے جو کہ ایک عظیم اَجر کا کام ہے مگر علمی اور تحقیقی حوالے سے کام کرنا کہیں نظر نہیں آتا۔

حافظ سعید رضا بغدادی نے شرکاء کانفرنس کی آمد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے عرفان القرآن کورس کا مختصر تعارف کرواتے ہوئے کہا اس 10روزہ کورس میں کم از کم تعلیم گریجویشن کے حامل طلباء و طالبات کو قرآن صحیح طور پر پڑھنے کیلئے علم التجوید کے تمام قواعد اور قرآن فہمی کیلئے عربی گرائمر کے تمام قواعد پڑھائے جاتے ہیں جس سے قرآن کریم اچھا پڑھنے کیساتھ ساتھ 80فیصد تک قرآن کریم کا ترجمہ کرنے کی بھی صلاحیت پیدا ہو جاتی ہے۔ جس کا عملی مظاہرہ شرکاء کانفرنس کے سامنے معلمین سے ایک آیت لکھ کر اُس پر تجوید اور عربی گرائمر کے تمام قواعد کا پوچھا گیا جس کودیکھ اور سُن کر شرکاء کانفرنس داد دئیے بغیر نہ رہ سکے۔

آخر میں اُن کا کہنا تھا کہ یہ 120معلمین اَب اپنے گلی محلوں میں عرفان القرآن اکیڈمیز کھولیں میں جس میں زیادہ سے زیادہ لوگوں کو شامل ہو کر قرآن فہمی کے علوم سے استفادہ حاصل کرنا چاہئے۔ تقریب کے اختتام پر تمام شرکائِ کلاس کو قرآن سکالرز کا سرٹیفکیٹ اور نمایا کارکردگی حاصل کرنے والے طلباء کو شیلڈز دی گئیں۔ انتظامیہ میں بھی بھرپور معاونت کرنے والوں کو خصوصی شیلڈز سے نوازا گیا۔ اور مہمانانِ گرامی کو بھی اعزازی شیلڈز تحریک منہاج القرآن جہلم کی انتظامیہ کی طرف سے دی گئیں آخر میں محمود مسعود قادری نے اُمت مسلمہ اور پاکستان کی عالمی دُنیا میں سربلندی کیلئے دُعا کی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button