جہلم

کالعدم تنظیم کا احتجاج، مظاہرین کو جہلم سے آگے کسی صورت نہ جانے دینے کا فیصلہ

وفاقی حکومت نے کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے مظاہرین کو جی ٹی روڈ پر روکنے کا فیصلہ کرلیا، جہلم میں پل کنٹینر رکھ کر بند کرکے رینجر تعینات کر دی گئی۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں ملکی سیاسی و معاشی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم کو ٹی ایل پی کے احتجاجی مارچ پر بریفنگ دی گئی اور فیصلہ کیا گیا کہ مظاہرین کو جہلم سے آگے نہیں جانے دیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ کو بریفنگ دی گئی کہ جہلم پل پر رینجرز تعینات کر دی گئی ہے۔ وزیراعظم نے کالعدم تنظیم کے غیرقانونی مطالبات نہ ماننے کا فیصلہ کیا جبکہ وفاقی کابینہ نے ریاست کی رٹ قائم رکھنے کا بھی فیصلہ کیا۔

ذرائع کے مطابق حکومت نے کالعدم تنظیم کے مظاہرین کو جی ٹی روڈ پر روکنے کا فیصلہ کیا ہے اور وزیراعظم نے شہریوں کا راستہ روکنے والوں سے سختی سے نمٹنے کی ہدایت کردی ہے۔

اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھاکہ پولیس والوں کو مارنا سیاسی کارکنان کاکام نہیں اور کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے نہیں دیا جائے گا، سیاسی مقاصد کیلئے تشدد کا راستہ اختیار نہیں کرنے دیں گے۔

دریاے جہلم پل کو کنٹینرز لگا کر ایک مرتبہ پھر بند کردیا گیا ہے، شہریوں کو کافی مشکلات کا سامنا ہے، پل بند ہونے سے ایک بارات پھنس گئی اور دولہا کو دوستوں نے کندھوں پر اٹھا کر پل پارکروایا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button