دینہاہم خبریں

دینہ پولیس کا کارنامہ، زخمی کو ہسپتال لے جانے والے رکشہ ڈرائیور کو دھر لیا

دینہ: پولیس سٹی چوکی دینہ کا کارنامہ ،2نوجوانوں کی لڑائی میں زخمی کو ہسپتال لے جانے والے رکشہ ڈرائیور کو پولیس نے بلا وجہ دھر لیا ،8گھنٹے تک ہتھکڑیاں لگا کر بِٹھائے رکھا ،رات ایک بجے ہزاروں روپے رشوت لے کر چھوڑ دیا ،پولیس سٹی چوکی دینہ نے مال بنانے کے چکر میں بے گناہ شہریوں کو تنگ کرنا معمول بنا لیا ،متاثرہ شخص کا شدید احتجاج ،آئی جی پنجاب سید کلیم امام ،آر پی او راولپنڈی اور ڈی پی او جہلم سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز محمد اعجاز نامی رکشہ ڈرائیور قائد اعظم ٹاؤن جی ٹی روڈ سے گزر رہا تھا کہ اس نے دیکھا کہ دو نوجوان آپس میں لڑ رہے ہیں جن میں سے ایک نوجوان ساگر ولد ارشد زخمی ہو گیا جسے رکشہ ڈرائیور محمد اعجاز نے انسانیت کا فرض سمجھتے ہوئے رکشہ میں ڈال کر پرائمری ہیلتھ سنٹر دینہ پہنچایا ہسپتال کے عملہ نے کہا کہ یہ پولیس کیس ہے جس پر پولیس کو اطلاع کی گئی۔

پولیس نے ہسپتال پہنچتے ہی کاروائی کرنے کی بجائے بے قصور رکشہ ڈرائیور محمد اعجاز خان کو بلاوجہ گرفتار کر لیا اور ہتھکڑیاں لگا کر پولیس سٹی چوکی دینہ لے آئے ،جہاں اسے 8گھنٹے تک بِٹھائے رکھا گیا اور اسے ذہنی ٹارچر کیا گیا ،رکشہ ڈرائیور محمد اعجاز کو رات 1بجے مال لے کر چھوڑ دیا۔

پولیس چوکی سٹی دینہ نے آئے روز شریف شہریوں کو مال بنانے کے لئے پریشان کرنا اپنا وطیرہ بنا رکھا ہے،متاثرہ شخص محمد اعجاز خان نے شدید احتجاج کرتے ہوئے آئی جی پنجاب سید کلیم امام ،آر پی او راولپنڈی اور ڈی پی او جہلم سے اپیل کی ہے کہ میرے ساتھ زیادتی ہوئی ہے جس کا نوٹس لیا جائے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button