جہلم

جہلم میں غیر معیاری، ملاوٹ شدہ فروٹ چاٹ، دہی بھلے، بریانی، سویٹ شاپس میں مٹھائیاں تیار ہونے لگیں

جہلم: شہر میں غیر معیاری ،ملاوٹ شدہ فروٹ چاٹ ، دہی بھلے ، بریانی ،سویٹ شاپس میں مٹھائیاں تیار ہونے لگیں۔ متعدد شہری اور بچے موذی امراض کا شکار،پنجاب فوڈ اتھارٹی کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی۔ شہریوں کا ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔

تفصیلات کے مطابق شہر اور گردونواح کے بازاروں میں فروٹ چاٹ، دہی بھلے ، بریانی ، مٹھائیاں ، سموسے پکوڑے فاسٹ فوڈ کی فروخت کرنے والے دکانداروں نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے ناقص و غیر معیاری اشیاء خوردونوش فروخت کرنے کے لئے جگہ جگہ اڈے قائم کر رکھے ہیں۔

شہریوں کی جانب سے متعدد بار شکایات کے باوجود پنجاب فوڈ اتھارٹی کے افسران و اہلکاروں نے مجرمانہ خاموشی اختیار کر رکھی ہے ناقص و غیر معیاری اور ملاوٹ والی اشیاء گلے سڑے پھل ، گلی سٹری سبزیاں ، ناقص گھی استعمال کرنے سے شہری موذی امراض کا شکار ہو رہے ہیں۔ جبکہ متعدد بیکریوں اور سویٹ شاپس کے کارخانوں میں صفائی کا انتہائی ناقص انتظام ہے۔

قابل ذکر امر یہ ہے کہ ان بیکریوں ، مٹھائی کی دکانوں پر کام کرنے والے کاریگروں کا میڈیکل تک نہیں کروایا جاتا اور نہ ہی وہ کارخانے جہاں مٹھائیاں ، پکوڑے سموسے ، فروٹ چاٹ وغیرہ تیا ر کی جاتیں ہیں غلاظت سے اٹے پڑے ہیں فوڈ انسپکٹر و دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اس مافیا سے گٹھ جوڑ کر رکھا ہے جس کی وجہ سے شہری مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔

ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ ان بیکریوں پر تیار ہونے والی اشیامیں خراب انڈے استعمال کئے جاتے ہیں۔ان مضر صحت اشیاء کے استعمال سے شہری اور بچے متعدد موذی امراض کا شکار ہو رہے ہیں جبکہ ڈاکٹرز نے بھی ان مضر صحت اشیاء کے استعمال کو معدہ کے لئے زہر قاتل قرار دے رکھاہے اس بارے پنجاب فوڈ اتھارٹی کی انتظامیہ نے کوئی مستقل حل نہیں نکالا اور خاموشی سوالیہ نشان بن چکی ہے۔

اس سے قبل ماضی میں کبھی کبھارپنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے کارروائی دیکھنے میں آتی تھی جو کہ اب عرصہ دراز سے دیکھنے میں نہیں آ رہی جس کی وجہ ناقص اشیاء خوردونوش فروخت کرنے والوں اور معیار چیک کرنے والوں کے درمیان مک مکا بتایا جاتا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button