گوگل میپ کا استعمال؛ نیوٹریشن سپروائزر راولپنڈی کے ڈینگی مریضوں کو پڑی درویزہ میں ڈھونڈنے پہنچ گیا

0

پڑی درویزہ: گوگل نقشہ کی بنیاد ظاہر کرکے ایک نیوٹریشن سپروائزر ڈینگی کے مشکوک مریضوں کی نشاہدہی پہلے پڑی درویزہ جہلم میں بعد میں مہوری راجگان راولپنڈی میں ظاہر کرتا رہا ۔ کسی دوسرے بی ایچ یو کا کوئی اہلکار غیر متعلقہ علاقہ میں نہیں آسکتا۔ ڈی ڈی ایچ او تحصیل سوہاوہ ڈاکٹر عمیر خالد کی وضاحت تاہم صورت حال کی مکمل تحقیقات کی یقین دہانی۔

تفصیلات کے مطابق بنیادی مرکز صحت نگیال تھانہ ڈومیلی تحصیل سوہاوہ کے علاقہ کا نیوٹریشن سپروائزر نوید احمد غیر متعلقہ بنیادی مرکز صحت پھلڑے سیداں میں ڈینگی کے مریضوں کے چند مشکوک نام لئے گاؤں پڑی درویزہ پہنچ گیا اورمحکمہ صحت کی ملازمین سے مریضوں کی تلاش کے متعلق سوالات کرتا رہا۔

ملازمین نے ڈینگی کے ان مریضوں کے متعلق بالکل عدم موجودگی کا اظہار کیا تو نیوٹریشن سپروائزر نوید احمد نے گوگل میپ کی رہنمائی کا ذکر کیا لیکن موقع پر جب مریضوں کی شناختی آئی ڈیز اسی نقشہ پر ڈالی گئی تو اس وقت گوگل میپ ان مریضوں کی موجودگی مہوری راجگان ضلع راولپنڈی کے علاقہ میں ظاہر کر رہاتھا ۔

نیوٹریشن سپروائزر کی اس حرکت پر کچھ سوالات پیدا ہوئے تو ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر تحصیل سوہاوہ ڈاکٹر عمیر خالد سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے مزکورہ نیوٹریشن سپروائزر کی اس حرکت کو بالکل غیر متعلقہ کہا کیونکہ کہ یونین کونسل پھلڑے سیداں کے علاقہ میں پہلے ہی ایک باقاعدہ سکول ہیلتھ نیوٹریشن سپراوائزر موجود ہے کسی دوسری یونین کونسل سے کسی اہل کار کا یہاں آنا اور ملازمین سے برائے راست رابطہ کرنا خلاف ضابطہ قرار دیا ۔

جب گوگل میپ کی رہنمائی کا ذکر کیا گیا تو ڈی ڈی ایچ او کا کہنا تھا کہ اس طرح مختلف مقامات کا اظہار ’’بات کچھ سمجھ سے بالا تر محسوس ہوتی ہے نیز یہاں تک کہا کہ کہانی کچھ بن نہیں پا رہی ‘‘تاہم ڈاکٹر عمیر خالد نے صورت حال کی مکمل تحقیقات کرنے کی یقین دہانی کرائی ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.