پنڈدادنخاناہم خبریں

جہلم کی تحصیل پنڈدادنخان کا ورثہ قلعہ نندنا تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا

پنڈدادنخان: جہلم کی تحصیل پنڈدادنخان کا ورثہ قلعہ نندنا تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا۔

ابو ریحان البیرونی نے اس قلعہ میں بیٹھ کر زمین کا نصف قطر معلوم کیا تھا اور طول بلد اور عرض بلد کا کلیہ بھی اسی مقام پر بیٹھ کر ایجاد کیا، شیر شاہ سوری کی فوجوں نے انہیں پہاڑوں پر پڑاؤ کیا اب بھی بیرون ملک سے سیاح یہاں آتے ہیں۔

جہلم کی تحصیل پنڈدادنخان کا یہ قیمتی ورثہ حکمرانوں کی عدم توجہی کیوجہ سے عدم تحفظ کا شکار ہے ، قلعے کی دیواریں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو چکی ہیں اور ان میں بڑی بڑی دراڑیں پڑ چکی ہیں، کسی بھی حکومت نے اس قلعے کی تزئین و آرائش کی طرف کبھی توجہ نہیں دی جس کیوجہ سے قلعہ نندنا آخری ہچکیاں لے رہا ہے۔

سابق صدر پرویز مشرف نے جہلم دورہ کے موقع پر قلعہ نندنا کی تزئین و آرائش کا اعلان کیا تھا لیکن وہ اعلان ، اعلان ہی ثابت ہوا، اس پر کوئی عملدرآمد نہ ہو سکا جبکہ رواں سال وزیراعظم عمران خان نے بھی قلعہ نندنا کا دورہ کیا تھا اور قلعہ نندنا کی تزئین و آرائش، سٹرک بنانے اور ہوٹل بنائے جائیں گے کا اعلان کیا لیکن ابھی تک حکومت کی جانب سے قلعہ نندنا کی تزئین و آرائش شروع نہ ہو سکی۔

اب اگر حکومت پنجاب محکمہ آثار قدیمہ اس طرف خصوصی توجہ دیں تو تحصیل پنڈدادنخان کے اس ورثہ کو محفوظ بنایا جا سکتا ہے اور قلعے تک سڑک تعمیر کرکے مقامی افراد کو روزگار کے مواقع بھی مہیا کئے جاسکتے ہیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button