جہلم

جہیز اور 80 تولے سونا نہ لانے پر پاکستانی نژاد برطانوی شہری نے بیوی کو طلاق دے دی

جہلم: رنگ بھی سانولہ ہے، نہ جہیز لے کر ائی ہو اور نہ ساتھ 80تولے سونا، ساس کی غیر ضروری ڈیماند پر شوہر نے اہلیہ طلاق دے دی۔شوہر برطانوی شہری ہے۔ 2012 ء میں تیرا سالہ لڑکی سے زیادتی کے الزام میں برطانیہ میں جیل بھی کاٹ چکا ہے۔اہلیہ سحرش میدان میں آگئی۔مجھ پر بھی ظلم کے پہاڑ توڑے گئے۔تیرا دن ساتھ گزارنے کے بعد برطانیہ جاکر طلاق بھیج دی ساس نے زیور چھین کر گھر سے نکال دیا۔شوہر کی نئی شادی کے لیے ساس رشتے دیکھ رہی ہے۔میرے جیسی کتنی لڑکیوں کی زندگیاں خراب کرچکا ہے مزید پتہ نہیں کتنی لڑکیوں کی زندگیوں سے کھیلے گا۔ ان خیالات کا اظہار مہدی شاہ کی رہائشی سحرش نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ میری شادی 4 نومبر 2019 کو ہوئی اور میرا شوہر برطانوی شہری ہے اور شادی کے 13 دن پاکستان رہا اور برطانیہ جاتے وقت مجھے اپنی فیملی کے پاس ڈھوک جمعہ میں چھوڑ گیا شوہر کے جانے کے بعد میری ساس صفیہ نے ظلم کے پہاڑ توڑ دیے مجھ باتوں باتوں میں ٹوکتی کہ تمہارا رنگ کالا ہے تم سانولی ہو تم جہیز نہیں لائی اپنے والدین کو بولو کہ 80 تولے سونا دے اس طرح کی غیر ضروری ڈیمانڈ کرنے لگ پڑی اور میری ساس مجھے کہتی کہ تم میرے بیٹے کو نہیں پسند اور اسکا تم سے دل بھر گیا اور اپنے بیٹے کو کہتی اس کو طلاق بھیجو اور میں تمہیں نئی شادی کرواوں۔میرے شوہر راجہ شبیر نے مجھے طلاق بھیج دی اور میرا فون بلاک کردیا مجھے میری ساس نے گھر سے نکال دیا۔مجھے شادی کے بعد پتہ چلا کہ میرے شوہر راجہ شبیر نے میرے سے شادی سے پہلے برطانیہ میں تیرا سالا لڑکی سے ریپ کیا اور وہ جیل بھی کاٹ چکا ہے اور شادی سے پہلے مجھے نہیں بتایا گیا وہ بلیک لسٹ ہوچکا ہے میری وزیر اعظم عمران خان اور برطانوی ہائی کمیشن سے اپیل ہے کہ مجھے انصاف دیا جاے میری زندگی خراب کرنے والوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button