اندرون شہر کے گلی محلوں میں گندگی اور گوبر کے ڈھیروں نے شہریوں کی زندگی اجیرن بنا دی

0

جہلم: اندرون شہر کے گلی محلوں میں گندگی اور گوبر کے ڈھیروں نے شہریوں کی زندگی اجیرن بنا دی،گندگی اور گوبر کے ڈھیروں کی وجہ سے مچھر اور دیگرحشرات الارض پروراش پانے لگے جو موذی اور جان لیوا امراض پھیلانے کا موجب بن رہے ہے۔

شہری مختلف امراض میں مبتلا ہو کر ہسپتالوں سے رجوع کرنے لگے ،گندگی اور گوبر کے ڈھیر ماحولیاتی آلودگی کا سبب بھی بننے لگے ،انتظامیہ خاموش تماشائی کا کردار ادا کرنے میں مصروف،شہریوں کا چیئرمین میونسپل کمیٹی جہلم سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق جہلم اندرون شہر کے رہائشیوں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بااثر افراد نے گلی محلوں میں بھینسوں کے باڑے قائم کر رکھے ہیں جس کی وجہ سے گلیوں ،محلوں میں گندگی اور گوبر کی بھرمار ہو چکی ہے گلیوں راستوں میں پھیلنے والی گندگی کے باعث شہریوں کو آمدورفت جاری رکھنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے جبکہ چھوٹے چھوٹے معصوم بچے گندگی کے جراثیموں کی وجہ سے موذی امراض میں مبتلا ہو رہے ہیں۔

شہریوں نے چیئرمین میونسپل کمیٹی جہلم سے مطالبہ کیا ہے کہ اندرون شہر میں قائم بھینسوں کے باڑوں کے خاتمے کیلئے سخت احکامات جاری کئے جائیں تاکہ ننھے بچوں کو موذی امراض سے محفوظ بنایا جا سکے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.