پنڈدادنخاناہم خبریں

سستا رمضان بازار لگانے کا تنازعہ پنڈدادنخان کی تاجران تنظیموں نے باہمی مشاورت سے حل کر لیا

پنڈدادنخان: حکومت پنجاب کے احکامات کے مطابق آمدہ ماہ رمضان کیلئے سستا رمضان بازار لگانے کا تنازعہ پنڈدادنخان کی تاجران تنظیموں نے باہمی مشاورت سے حل کر لیا، پندرہ دن ریلوے روڈ پر جبکہ آخری پندرہ روز شالیمار چوک میں سستا رمضا ن بازار لگے گا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی پالیسی ماہ رمضان میں عوام الناس کو خوردو نوش کی سستی اشیاء کی وافر فراہمی کے سلسلے میں اسسٹنٹ کمشنر پنڈدادنخان نے بلدیہ اہلکاروں کو شالیمار چوک میں سستا رمضان بازار کیلئے شامیانے لگانے کا حکم دیا جبکہ گردو نواح کی تاجر برادری کے تحفظات تھے کہ حالیہ کورونا کے باعث پہلے ہی کاروباری حالات نا گفتہ بہہ ہیں جبکہ ایک طرف سے شامیانے لگا کر روڈ بلاک کر دینے سے کاروبار مکمل ٹھپ ہو نے کا خدشہ ہے۔

دوسری جانب ریلوے روڈ کے دوکانداروں کا موقف اپنی جگہ درست تھا کہ مسلسل پانچ سالوں سے اس روڈ پر سستا رمضان بازار لگایا جا رہا ہے، امسال ہم قربانی کا بکرا نہیں بنیں گے جس کی بنا پر تاجران کے دونوں گروپس اپنی اپنی جگہ تاجر برادری کے حقوق کیلئے احتجاج کیلئے تیارہو گئے، اس دوران لا اینڈ آرڈر کو ملحوظ رکھتے ہوئے انچارج چوکی پولیس پنڈدادنخان بھی اپنی نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے۔

دریں اثناء موقع کی نزاکت کو بھانپتے ہوئے تاجران کے معتبر افراد شاہد باگوان کونسلر ایم سی چوہدری زبیر سابق جنرل سیکرٹری ملک غلام مصطفے مٹھو فوکل پرسن پی ٹی آئی حا جی منظور سید اسد بخاری استاد جلیل جنرل سیکر ٹری ریلوے روڈ خواجہ غلام حسنین موجودہ صدر مرکزی انجمن تاجران وغیرہ باہمی حکمت عملی اور انتشار سے بچنے کیلئے فیصلہ کیا۔

بذریعہ پرچی یہ فیصلہ کیا پندرہ دن شالیمار چوک اور بقیہ پندرہ دن ریلوے روڈ پر سستا رمضان بازار لگایا جائے گا جس پر دونوں گروپ تاجران کے باہمی مفاد پر متحد ہو گئے یوں دو پرچیاں ڈال کر تمام تاجران نمائندوں اور پولیس کی موجودگی ایک بچے سے پرچی اٹھوائی گئی تو قرعہ ریلوے روڈ کے نام نکلا جس بنا پر فریقین متفق ہو گئے۔

اس موقع پر میونسپل کمیٹی پنڈدادنخان کے ترجمان حاجی اسلم نے موقع پر موجود تمام تاجر برادری کو یقین دہانی کرائی کہ انشاء اللہ 15 دن کے بعد آخری پندرہ دن یہ سستا بازار شالیمار میں شفٹ کر دیا جائے گا، یوں مثبت حکمت عملی سے تاجران کے نمائندوں نے مقامی انتظامیہ کا مسئلہ حل کر دیا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button