عوام کی نمائندگی نہ کرنے والی جمہوریت نہیں چل سکتی، اپنا حق جہلم لے کر آئیں گے۔ فواد چوہدری

سابق حکمرانوں نے وطن عزیز کو بے دردی سے لوٹا جس کی وجہ سے ضلع جہلم کے بیشتر علاقے بدحالی کا شکار ہیں ۔ چوہدری فرخ الطاف

0

سوہاوہ (عادل چوہدری+ چوہدری عابد محمود) وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ جو جمہوریت عوام کے بارے میں نہیں سوچے گی وہ نہیں چل سکتی، پارلیمنٹ میں قبرستان جیسی خاموشی اختیار کی تو ملک نہیں چلے گا اور عوام کی نمائندگی نہ کرنے والی پارلیمنٹ نہیں چل سکتی۔

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے ڈومیلی کے علاقے فتح پور میں کارکنوں کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو پینے کا پانی میسر نہیں اور حکمران میٹرو بناتے رہے، اسکول میں بچوں کے پاس بیٹھنے کے لیے کرسی نہ ہو اور میٹرو بنالیں تو یہ زیادتی ہے، ہرسال جہلم سے اربوں روپے قومی خزانے میں جاتے ہیں لیکن پچھلی حکومت میں چھوٹے علاقوں کو نظر انداز کیا گیا، لہذا ملک کو فلاحی ریاست بنانے کیلئے وسائل کی منصفانہ تقسیم کرنا ہوگی۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ جہلم میں ہزاروں سال پرانی تاریخ کے امین لوگ ہیں، ہماری عزت آپ لوگوں سے ہے،عوام سے کئے گئے وعدے پورے کرینگے، ملک کو فلاحی ریاست بنانے کیلئے وسائل کی منصفانہ تقسیم کرنا ہو گی، عوام کا پیسہ عوام کی مرضی سے استعمال ہو سکے یہ صرف بلدیاتی نظام سے ہی ممکن ہے، جن لوگوں نے خزانہ خالی کیا ان سے پیسے واپس لے کر عوام پر خرچ کریں گے۔

ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان کے چھوٹے اضلاع وسائل سے محروم رہے ہیں، جو ٹیکس ادا کرتے ہیں لیکن ان کے پیسے ان ہی کے پاس دوبارہ نہیں پہنچتے۔ انہوں نے کوئٹہ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ ’میں نے اسمبلی میں کہا کہ 15 سو ارب روپیہ بلوچستان گیا لیکن پھر بھی کوئٹہ میں بہتر ہسپتال موجود نہیں ہے‘۔ بلوچستان میں کہیں بھی کوئی حادثہ پیش آتا ہے تو طیاروں کے ذریعے متاثرین کو کراچی منتقل کیا جاتا ہے۔


وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ میں پیسوں کا حساب مانگوں تو الزام لگتا ہے کہ پارلیمنٹ کو چلنے نہیں دیا جارہا، ملک کے فیصلہ ساز لوگوں کو بتادیتا ہوں کہ اس طرح سے پارلیمنٹ چلائی تو ملک نہیں چلے گا، آپ پارلیمنٹ میں قبرستان جیسی خاموشی چاہتے ہیں کہ کوئی سوال نہ کرے اور گریبان نہ پکڑے، میں اربوں کھربوں لوٹنے والوں سے سوال کروں تو جمہوریت خطرے میں پڑجاتی ہے، مجھے بتائیں عوام کی نمائندگی نہ کرنیوالی پارلیمنٹ اور جمہوریت کیسے چل سکتی ہے۔

انہوں نے سوال کیا جو جمہوریت عام آدمی کی ہی نمائندگی نہیں کرے گی وہ نہیں چل سکتی۔ انہوں نے کہا کہ چھوٹے علاقوں کا بجٹ بھی بڑے شہروں میں اورنج لائن جیسے منصوبوں پر لگا دیے گئے ہیں۔ اپنے حریفوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کتنے ہی لوگ ایسے ہیں جنہوں نے سیاست شروع کی تھی تو ان کے پاس سائیکل اور موٹر سائیکل تھی، لیکن اب ان کے پاس لگژری گاڑیاں ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جب ایسے افراد سے ان کی اس دولت کے بارے میں سوال کریں گے تو ملک میں جمہوریت خطرے میں آجائے گی۔ اپنے وعدے دہراتے ہوئے وفاقی وزیرِ اطلاعات کا کہنا تھا کہ ’ہم نے چوروں سے لوٹی ہوئی رقم واپس لانے کا وعدہ کیا تھا، وہ پورا کرکے دکھائیں گے‘۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ہمیں یہ دیکھنا ہے کہ وفاق اور صوبوں کا خزانہ عوام تک پہنچ رہا ہے یہ نہیں۔ وزیرِاعظم عمران خان ایسا نظام چاہتے ہیں جس کے ذریعے سرکار کا پیسہ عام آدمی کی مرضی سے اس کے علاقے میں لگیں۔ اپنی بات کو واضح کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پیسے کو عوام تک منتقل کرنے کا طریقہ کار صرف مضبوط بلدیاتی نظام ہے۔

فواد چوہدری نے مزید کہا کہ عمران خان طاقتور بلدیاتی نظام کی حمایت کرتے ہیں تاکہ سرکاری خزانے سے براہ راست عوام کو فائدہ پہنچے، سعد رفیق سمیت بہت سے سیاست دان جب سیاست میں داخل ہوئے تو موٹرسائیکل اور سائیکل پر تھے اور اب دس دس مرلے کی گاڑیاں آگئیں، حساب مانگو تو جمہوریت خطرے میں اور پارلیمانی نظام کو بریک لگ جاتی ہے، لاہور اسلام آباد سے اپنا حق جہلم لے کر آئیں گے، جن لوگوں نے خزانہ خالی کیا ان سے پیسے واپس لیں گے۔

اس موقع پر موجود پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما ممبر قومی اسمبلی چوہدری فرخ الطاف نے کہاکہ انتخابات سے قبل ترقیاتی کاموں کے حوالے سے جو وعدے کئے تھے انشاء اللہ بہت جلد پورے کئے جائیں گے ۔ جس کی مثال گزشتہ روز یونین کونسل نگیال کے علاقہ پوٹھہ میں 71 سال بعد بجلی کی فراہمی ہے ۔

انہوں نے کہا سابق حکمرانوں نے وطن عزیز کو بے دردی سے لوٹا جس کی وجہ سے ضلع جہلم کے بیشتر علاقے بدحالی کا شکار ہیں۔ 71 سالوں کے مسائل راتوں رات ختم نہیں ہو سکتے اس کے لئے سخت محنت کرنا ہوگی جس کے لئے عوام کو ساتھ دینا ہو گا۔ چوہدری فرخ الطاف نے اپنے خطاب میں کہا کہ میرے دروازے عوام کے لئے 24 گھنٹے کھلے ہیں اور میں عوام کی خدمت کے لئے حاضر ہوں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.