دینہاہم خبریں

دینہ اور گردونواح میں یوم شہادت امیر المومنین حضرت علی عقیدت و احترام سے منایا گیا

دینہ (سیّدجواد حسین نقوی +سیّد علی نقی نقوی سے) دینہ اور گرد و نواح میں یوم شہادت امیر المومنین حضرت علی ابن ابی طالب علیہ السلام روایتی جوش و جذبہ اور عقیدت و احترام سے منایا گیا۔مختلف امام بارگاہوں میں مجالس عزا اور ماتمی جلوسوں کا انعقاد۔

تفصیلات کے مطابق21رمضان یوم شہادت امیر المومنین حضرت علی ابن ابی طالب علیہ السلام کی مناسبت سے دینہ و گردو نواح کی تمام مرکزی امام بارگاہوں ہڈالہ سیّداں،اسد آباد شیخوپور،چک عبد الخالق،موضع سید حسین،قلعہ روہتاس اور دیگر مقامات پر روایتی مجالس عزا اور ذاکرین عظام و علمائے کرام کے خطاب کے بعد ماتمی جلوسوں کا انعقاد ہواجن میں عزاداران و سوگواران کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

اسی سلسلہ میں ہڈالہ سیّداں منگلا روڈ دینہ کی مقامی امام بارگاہ میں انجمن امامیہ سادات ہڈالہ سیّداں کی ایڈ ہاک کمیٹی کے زیر اہتمام رات نو بجے مجلس عزا منعقد ہوئی جس میں مولانا سیّد سبط الحسن آف منڈی بہاوالدین اور ذاکر شاہد عباس قمر آف اوکاڑہ نے خطاب کیا۔

مولانا سیّد سبط الحسن نے اِس موقع پر نزول قرآن اور وارث قرآن کے عنوان سے حضرت علی ؑ کی زندگی کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ رسول خداﷺ کی آغوش میں حضرت علی( ع) نے پرورش پا کر صفات و کمالات الہیٰ اور صفات انبیاء کا عملی پیکر بن گئے جن کی پوری زندگی اسلام کی تبلیغ اور دفاع میں بسر ہوئی،رسول خدا ﷺ کے بعد علم ،شجاعت ،عدالت اور سخاوت میں حضرت علی کا کوئی ثانی نہیں۔

انھوں نے نے کہا کہ آج اُمت مسلمہ قرآن اور اہلبیت کے دامن کو چھور دینے کے باعث دُنیا میں ذلیل و رسوا ہو رہی ہے، قرآن اور اہلبیت کی تعلیمات پر عمل پیرا ہو کر ہی ملت اسلامیہ پوری دُنیا میں سرخرو ہو سکتی ہے۔

مجلس کے اختتام پر شبیہ تابوت برآمد ہو کر ماتمی جلوس اپنے روائتی راستہ سے ہو کر جامع مسجد صاحب الزمان میں پہنچ کر ختم ہوئے جہاں مولانا باقر حیدری کی نگرانی میں اعمال شب قدر اجتماعی طور پر ادا کئے گئے۔مومنین کی کثیر تعداد نے پروگرام میں شرکت کی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button