حکومت پاکستان خواجہ سراؤں کے حقوق کے لیے عملی اقدامات کر رہی ہے۔ ڈپٹی کمشنر سیف انور

0

جہلم: حکومت پاکستان خواجہ سراؤں کے حقوق کے لیے عملی اقدامات کر رہی ہے ، انسانی بنیادی حقوق فراہم کرنا ضلعی انتظامیہ جہلم کی ترجیح ہے ،خواجہ سرا ؤں کی اپنی شناخت، روزگار، تعلیم، ہسپتال ، سکول کالج، تھانہ ،پر امن ماحول، شیلٹر ہوم، کمیونٹی اور ووٹ ڈالنے کے لئے ڈسٹرکٹ ٹرانس جینڈر کمیٹی میں اہم فیصلے کیے گئے۔

ان خیالات کا اظہارڈپٹی کمشنر جہلم محمد سیف انور جپہ نے مذکورہ طبقہ کی فلاح و بہبود، علاج معالجہ اور روزگار کی فراہمی کے لئے خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اخوت فاؤنڈیشن کے تحت انکو انٹرسٹ فری لون، ماہانہ وظیفہ فراہم کیا جا رہا ہے ، جبکہ عورت فاؤنڈیشن کے سروے کے تحت خدمات کارڈز اور بی آئی ایس پی کارڈز کا اجرا کیا جائے گا۔ حکومت پنجاب نے خواجہ سراہوں کے حوالے سے سردست ایک قانون بنا دیا ہے جس کے تحت انکو سہولیات فراہم کرنے میں ضلعی افسران کام کر رہے ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ سماجی تنظیموں کو سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ مل کر خواجہ سراؤں کی زندگی میں بہتری لا رہے ہیں ۔اجلا س میں خواجہ سراؤ ں کو صحت کی اولین سہولیات فراہم کرنے کے لئے سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر وسیم اقبال کو ضروری ہدایت جاری کردی گئی، جبکہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر نادرا کو رجسٹریشن پالیسی 2018 کے تحت خواجہ سراؤ ں کے شناختی کارڈ کے اجر اء کی ہدایت بھی دی گئی۔ ڈپٹی کمشنر جہلم نے خواجہ سراؤ ں کے مسائل سننے کے بعد ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کہ عزم کیا۔

خصوصی اجلاس میں ڈی او سوشل ویلفیئر واجد حسین چوہدری، ڈی او انڈسٹریز محمد سعید، ڈی او انفارمیشن عثمان سندھو، سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر وسیم اقبال، اسسٹنٹ ڈائریکٹر نادرا، نمائندہ خواجہ سرا مجاہد بابر (لبنہٰ لال)، سیمی صدیقی اور دیگر نے شرکت کی۔ڈپٹی کمشنر نے مزید کہا ہے کہ خواجہ سراؤں کے لئے جانی و مالی تحفظ، علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں اور حکومتی اعلیٰ سطح کمیٹی کی سفارشات پر خواجہ سراؤں کی فلاح و بہبود کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.