سوہاوہ

جشن آزادی؛ سوہاوہ شہر میں نجی تعلیمی اداروں پر قومی پرچم کا نہ لہرانا لمحہ فکریہ، شہریوں کا اظہار تشویش

پڑی درویزہ: سوہاوہ شہر میں نجی تعلیمی اداروں پر قومی پرچم کا نہ لہرانا لمحہ فکریہ ہے، شہریوں کا اظہار تشویش، ڈپٹی کمشنر اور تعلیمی انتظامیہ ضلع جہلم سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔

وطن عزیز اسلامی جمہوریہ پاکستان کے 71ویں یوم آزادی کا جشن منانے کے سلسلہ میں پورے ملک میں دھوم دھام سے تیاریاں جاری ہیں ۔ سوہاوہ شہر میں موجود سرکاری تعلیمی ادارے جو گرمیوں کی تعطیلات کے بعد 11اگست کو ہی کھلے ہیں پر بہترین قومی پرچم لہرایا جارہا ہے جبکہ سوہاوہ میں 60کے قریب نجی ( پرائیویٹ ) تعلیمی اداروں پر کوئی قومی پرچم نہیں لہرایا گیا نہ ہی جشن آزادی کے سلسلے میں کوئی سرگرمی دکھائی دیتی ہے ۔

سرکاری تعلیمی اداروں میں تو معمول کے مطابق 14اگست کے دن باقاعدہ پرچم کشائی کی تقاریب منعقد ہوتی ہیں اور جشن آزادی کی اہمیت پر اساتذہ اور طلباء و طالبات روشنی ڈالتے ہیں ۔ نجی تعلیمی اداروں کی انتظامیہ کی طرف سے قومی پرچم کے نہ لہرانے پر سوہاوہ کے شہریوں نے سخت تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے ثابت ہو گیا ہے یہ ادارے صرف اور صرف علم کے تاجر کا کردار ادا کر رہے ہیں ۔اس صورت حال کے پیش نظر سوہاوہ کے عوامی سماجی حلقوں نے ڈپٹی کمشنر اور محکمہ تعلیم ضلع جہلم کی انتظامیہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے کیونکہ کے ان نجی تعلیمی اداروں کو بھی قومی تہوار کے موقع پر برابر کردار ادا کرنا چاہیے ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ یہ وہ تعلیمی دوکانیں ہیں جو گرمیوں کی چھٹیوں میں اساتذہ کو اجرت بھی ادا نہیں کرتے لیکن طلباء و طالبات سے چھٹیوں کی بھاری فیسیں وصول کر لیتے ہیں جو ان کا ذاتی منافع ہوتا ہے ۔ یہ منافع طلباء و طالبات کے والدین اور اساتذہ کا استحصال ہوتا ہے ۔ ایک قومی تہوار کے موقع پر ایک پرچم تک لہرانا ان کی ترجیحات میں شامل نہیں ہوتا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button