جہلم

نیا تعلیمی سال شروع ہوتے ہی طلباء و طالبات کی یونیفارم اور جوتوں کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ

جہلم: ضلع بھر میں نیا تعلیمی سال شروع ہوتے ہی طلبہ و طالبات کی یونیفارم اور جوتوں کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ، والدین سخت ذہنی تناؤ کا شکار ہو گئے۔

طلباء و طالبات کی یونیفارم اور جوتوں کی قیمتوں میں دکانداروں نے خود ساختہ اضافہ کرکے غریب والدین کو پریشانی سے دوچار کرنے سمیت نچلے طبقہ کے لئے تعلیم کا حصول انتہائی دشوار بنا دیا ، کمر توڑ مہنگائی کیوجہ سے والدین کے لئے دیگر تعلیمی اخراجات پورے کرنے پہلے ہی ایک چیلنج تھے اوپر سے یونیفارم اور جوتوں کی قیمتوں میں اضافہ حالات کے ستائے والدین کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالنے کے مترادف ہے، متوسط اور غریب طبقہ کے افراد کے لئے پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے اخراجات برداشت نہ کر سکنے کے ساتھ سرکاری تعلیمی اداروں کی یونیفارم اور جوتوں کو ہی خریدنا محال دکھائی دیتا ہے۔

عوامی حلقوں اور طلباء و طالبات کے والدین نے ڈپٹی کمشنر جہلم سی ای او محکمہ تعلیم سے مطالبہ کیا ہے کہ طلبہ و طالبات کی یونیفارم اور جوتوں کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کی بجائے 50 فیصد کمی کرکے والدین کو ریلیف دیا جائے تاکہ بہتر تعلیم حاصل کرکے بچے معاشرے کے بہتر شہری بن سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button