جعلی میڈیکل لائسنس تیار اورچالان کرنے پرسی ایف او محکمہ صحت کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج و چیئرمین ڈرگ کنٹرول راولپنڈی کے حکم پر کارروائی شروع

0

جہلم: ممبر ڈسٹرکٹ بار کے نام پر جعلی میڈیکل لائسنس تیار کرنے اورچالان کرنے پر سی ایف او محکمہ صحت افضال احمد کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج ، فراڈ کے مقدمہ میں سابق ای ڈی او ہیلتھ آصف علی خان ، سیکرٹری ڈسٹر کٹ کوالٹی کنٹرول برخونہ وحید ، ڈرگ کنٹرولر نصیر احمد، ڈرگ انسپکٹر وقار حیدر کے کردار بارے تفتیش کی جائے ، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج و چیئرمین ڈرگ کنٹرول راولپنڈی کے حکم پر کارروائی شروع۔

تفصیلات کے مطابق ممبر ڈسٹرکٹ بار جہلم شیخ طیب ذوالفقار ایڈوکیٹ نے سول ہسپتا ل کے سامنے طیب فارمیسی کے نام سے میڈیکل سٹور کھول رکھا تھا جس کو انہوں نے کچھ عرصہ بعد سیل کر دیا ، جو ہاتھ در ہاتھ فروخت ہونے کے بعد تیسرے مالک کے پاس پہنچ گیااور اس کا نام ڈاکٹر فارمیسی رکھ دیا گیا نئے مالک نے محکمہ صحت کی ملی بھگت سے جعلی لائسنس پر کام جاری رکھا۔

محکمہ صحت کی جانب سے مذکورہ میڈیکل سٹور پر چھاپہ مارا گیا اور نئے مالک سے مبینہ ملی بھگت کے بعد ایک سال قبل فروخت کرنے والے شیخ طیب ذوالفقار ایڈوکیٹ کے نام پر چالان کر دیا گیا جس کے خلاف شیخ طیب ذوالفقار نے عدالت سے رجوع کیا جہاں دوران انکوائری سی ایف او افضال احمد کی جانب سے شیخ طیب کے نام پر ڈاکٹر فارمیسی کا لائسنس جعلسازی سے جاری کر نے کا انکشاف کیا گیا ، جبکہ محکمہ صحت کے ریکارڈ میں نئے مالک کی بجائے پرانے مالک کے نام پر خود ساختہ درخواستیں بھی نکل آئیں۔

شیخ طیب ایڈوکیٹ کو پھنسانے کی خاطرمحکمہ کے ریکارڈ میں ٹمپرنگ کرنے پر سی ایف او افضال احمد کے خلاف تھانہ اینٹی کرپشن جہلم نے زیر دفعہ 420/468مقدمہ درج کر کے سابق ای ڈی او آف علی خان ،سیکرٹر ی کوالٹی کنٹرول برخونہ وحید ، ڈرگ کنٹرول نصیر احمد ، ڈرگ انسپکٹر وقار حیدر کے خلاف انکوائری شروع کردی ہے ۔

اس حوالے سے مدعی مقدمہ شیخ طیب کا کہنا ہے کہ ڈرگ کنٹرول نصیر احمد نے عرصہ دراز سے اندھیر نگری مچا رکھی ہے جس میں محکمہ صحت کے کئی افسران بھی شامل ہیں ان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.