پنڈدادنخاناہم خبریں

گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی پنڈدادنخان میں پرنسپل کی تعیناتی نہ ہونے پر کالج قرضہ پر چلنے لگا

پنڈدادنخان: پرنسپل کی تعیناتی نہ ہونے پر کالج قرضہ پر چلنے لگا، گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی پنڈدادنخان کے 1200 طلباء کا مستقبل تاریک ہونے سے بچایا جائے ۔وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی چوہدری فواد حسین اور چیئر پرسن ٹیوٹا لاہور علی سلمان توجہ دیں ۔اہل علاقہ
گزشتہ کئی ماہ سے کالج کے پرنسپل کی پراپر تعیناتی نہ ہونے کی وجہ سے فنڈنگ رکنے پر کالج کے معاملات میں مشکل پیش آنے کے ساتھ ساتھ مسائل میں اضافہ ہونے لگا ۔مشکلات کو دیکھتے ہوئے کالج طلباء نے بھی کالج انتظامیہ کے خلاف مین روڈ بلاک کرتے ہوئے زبر دست سٹرائیک بھی کی۔
اس پر زونل منیجر نارتھ شیراز احمد لودھی اور کالج کے فرض شناس انچارج وائس پرنسپل انجینئر رضوان احسن کے تعاون اور اپنے ذاتی سورسز اور کاوش سے کالج کے معاملات قرضہ اٹھا کر چلانے پر مجبور ہو گئے۔ رقم نہ ہونے کی وجہ سے کالج کے پانی کے کنکشن سے لے کر فیول اور گاڑیوں کے ٹائروں تک کو قرضہ لے کر چلانا پڑ رہا ہے۔
اہل علاقہ نے فواد حسین چوہدری اور علی سلمان صدیق چیئر پرسن ٹیوٹا سے پرزور اپیل کی کہ گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی پنڈدادنخان میں فی الفور پرنسپل تعینات کیا جائے یا فنڈ کے اخراجات کیلئے ڈی ڈی او پاور موجودہ سینئر سٹاف ممبر میں ٹرانسفر کی جائے تا کہ کالج معاملات درست طریقے سے چل سکیں اور تحصیل پنڈدادنخان کا سرمایا و ادارہ محفوظ ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button