بے جا جرمانوں کا خوف اور تھانے بند کرنے کی دھمکیاں، دوکانداروں نے اشیاء خوردونوش رکھنا بند کردیا

0

کھیوڑہ: بے جا بھاری روپے جرمانے کا خوف اور تھانے بند کرنے کی دھمکیاں ،گلی محلے کے دوکانداروں نے چینی ، انڈے، آٹا سمیت سیب ،کیلا ،لیموں رکھنا بند کردیا۔گھریلوں غریب صارفین کی مشکلات میں اضافہ، انتظامیہ مارکیٹ، منڈی میں قیمتیں کم کروانے میں بری طرح ناکام،سب اچھے کی رپورٹ کے لئے اعزازی پرائس مجسٹریٹوں نے چھوٹے دوکانداروں کا ہدف بنا رکھا ہے۔غیر مناسب رویہ سمیت بے جا کاروائیوں پرپرچون مرچنٹس کا احتجاج۔
تفصیلات کے مطابق کھیوڑہ سمیت للِہ ،ٹوبہ،گول پور ،پی ڈی خان کے بیشتر اندورنی علاقوں نے اعزازی پرائس مجسٹریٹوں کے خوف سے عام ضرورت کی اشیاء جن میں چینی ،انڈے،آٹاسمیت سیب ،کیلا ،لیموں شامل ہے رکھنا بند کردیاہے جس سے روز مرہ کی بنیاد پر چیزیں خریدنے والے ہزاروں دیہاڈی دار صارفین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے گلی محلوں میں قائم ان پرچون کریانہ اور سبزی کی دوکانوں پر غریب طبقے سے تعلق رکھنے والے لوگ خریداری کرتے ہیں۔
دوکانداروں کا کہنا ہے کہ پہلے کو گورنمٹ ریٹ لسٹ کے مطابق اشیاء منڈی سے ملتی ہی نہیں ہے جبکہ ریٹ لسٹ پر قیمت پر کلو ،درجن کے حساب سے درج ہوتی ہے اور ہمارے گاہک چیز بیس ،تیس روپے کی لیتے ہیں اس طرح ہمارے لیے کیسے ممکن ہے زیادہ قیمت کی چیز کم میں فروخت کریں ،ماہ رمضان میں حکومتی اربوں روپے کی سبسڈی کا تو علم نہیں کہا گئی جبکہ پرائس مجسٹریٹوں سمیت دیگر سرکاری آفیسران نے سب اچھا کی رپورٹ کے لئے ہمیں ہدف بنا رکھا ہے کہ اشیاء ریٹ لسٹ کیمطابق فروخت کی جائے ،نقصان اٹھانے اور جرمانوں سے بچنے کے لیے ہم نے مزکورہ اشیاء خردونوش رکھنا ہی بند کر دیا ہے جو ہمارے معاشی قتل کے مترادف ہے۔
آفیسران کے غیر مناسب رویہ سمیت بے جا کاروائیوں پرپرچون مرچنٹس نے احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ زمینی حکائق کی روشنی میں مثبت اقدامات کیے جائیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.