جہلم

دودھ کے معیار کو چیک کرنے والی ٹیمیں ناکام، جہلم میں دودھ اور دہی کے نام پر زہر فروخت کیا جانے لگا

جہلم: شہر اور گردونواح میں دودھ کے معیار کو چیک کرنے والی ٹیمیں ناکام، جگہ جگہ، گلی گلی، غیر معیاری، ملاوٹ شدہ دودھ ، دہی کے نام پر زہر فروخت کیا جانے لگا، شہریوں کا ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق شہر و گردونواح میں غیر معیاری اور ناقص دودھ، دہی کی فروخت کا کارروبار عروج پکڑ چکا ہے، گلی گلی، محلوں میں ملاوٹ شدہ، مضر صحت اور ناقص وغیر معیاری دودھ ، دہی فروخت کیا جا رہا ہے ، شیر فروش شہریوں کی صحت کو پس پشت ڈال کر غیر معیاری مضر صحت دودھ ، دہی کی فروخت جاری رکھے ہوئے ہیں۔

دودھ میں کیمیکل ملا کر دودھ کو انتہائی مضر صحت بنا کر مہنگے داموں فروخت کیا جا رہاہے جس کے استعمال سے چھوٹے چھوٹے معصوم بچے اور بزرگ شہر ی مہلک امراض کا شکار ہو رہے ہیں۔

اندرون شہر سمیت ملحقہ آبادیوں کے گلی محلوں میں فروخت ہونے والا دودھ انتہائی غیر معیاری ہے دودھ میں مضر صحت کیمیکل ملا کر شہریوں میں بیماریاں فروخت کی جارہی ہیں۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران نے اس حوالے سے مکمل خاموشی اختیار کر رکھی ہے، قانون نافذ کرنے والے اداروں کی عدم دلچسپی کے باعث دودھ ، دہی کے کارروبار میں غیر معمولی اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

شہریوں نے ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے مطالبہ کیاہے کہ ضلع جہلم میں فروخت ہونے والے ناقص وغیر معیاری دودھ ، دہی کی فروخت کا نوٹس لیتے ہوئے پڑوسی اضلاع سے دودھ منتقل کرنے والے بااثر گوالوں کے خلاف فوجداری مقدمات درج کروائے جائیں تاکہ شہری بیماریوں سے محفوظ رہ سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button