جہلم

جہلم کے مختلف نجی ہسپتالوں کی اربوں روپے کی پراپرٹیز، قومی خزانے کو ٹیکس کی مد میں گھپلے

جہلم: مختلف نجی ہسپتالوں کی اربوں روپے کی پراپرٹیز ، قومی خزانے کو ٹیکس کی مد میں گھپلے ،شہریوں کا فیڈرل بورڈ آف ریونیو سے تحقیقات کروانے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق شہر اور مضافاتی علاقوں میں مختلف نجی ہسپتالوں کے مالکان نے کروڑوں اربوں روپے کی جائیدادیں خرید رکھی ہیں جبکہ بااثر ڈاکٹرز نے شہر کے پوش علاقوں کے اہم مقامات پر نجی ہسپتال قائم کررکھے ہیں جہاں سے روزانہ کی بنیاد پر لاکھوں روپے کی آمدن ہو رہی ہے ، مگر ٹیکس نہ دینے کے برابر ہے جبکہ بعض نجی ہسپتالوں کے مالکان نے متعلقہ محکموں اور واپڈا کی ملی بھگت سے ہسپتالوں کو گھر ظاہر کرکے قومی خزانے کو نقصان پہنچایا جا رہاہے ۔

بااثر مالکان نے ہسپتالوں سے ملحقہ جگہوں پر پارکنگ قائم کرکے میونسپل کمیٹی کے قوانین کو پاؤں تلے روندنا شروع کر رکھا ہے ۔ غیر قانونی ناجائز پارکنگ کیوجہ سے موٹر سائیکل سواروں اور چھوٹی گاڑیوں سمیت ایمبولینسز کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ حالانکہ میونسپل کمیٹی کے قوانین کے مطابق ہسپتال مالکان کو پلازوں ہسپتالوں کی بیسمنٹ میں پارکنگ قائم کرنا ہوتی ہے ۔ لیکن نقشہ برانچ کی ملی بھگت کیوجہ سے بااثر مالکان نے ہسپتالوں کے باہر سروس روڈ سمیت سڑکوں پر پارکنگ قائم کررکھی ہے ۔ جسکی وجہ سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہاہے ۔

شہری کی سماجی ، رفاعی ، فلاحی ، مذہبی ، کارروباری تنظیموں کے عمائدین نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے ذمہ داران سے مطالبہ کیاہے کہ جہلم سمیت ضلع بھر میں قائم نجی ہسپتالوں کے مالکان کے اثاثے چیک کرنے کالائحہ عمل مرتب کیا جائے تاکہ قومی خزانے کو چونا لگانے والے مسیحاؤں سے رقم وصول کرکے سرکاری خزانے میں جمع کروائی جائے تاکہ ملک خوشحال ہو سکے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button