جہلماہم خبریں

سول ہسپتال جہلم کے ڈاکٹر انسانی جانوں سے کھیلنے لگے، مریض تجربات کی بھینٹ چڑھ گئے

جہلم: ڈی ایچ کیو جہلم کے ڈاکٹر انسانی جانوں سے کھیلنے لگے، معمولی درد ، کٹ لگنے پر بھی مریضوں کے آپریشن تجویز، لاکھوں روپے لے کر بھی غلط آپریشن ، آرتھوپیڈک، کڈنی کے مریض تجربات کی بھینٹ چڑھنے لگے، ہسپتال انتظامیہ ڈاکٹر وں کے آگے مکمل بے بس ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر کے سب سے بڑے ہسپتال میں ڈاکٹر وں کی لاپروائی اس حد تک بڑھ چکی ہے کہ وہ بغیر کسی وجہ اور ضرورت کے ہسپتال آنے والے مریضوں کے آپریشن تجویز کردیتے ہیں اور مریضوں کے اہلخانہ کو ہسپتال میں آپریشن کی مناسب سہولیات نہ ہونے کا کہہ کر اپنے نجی ہسپتالوں میں ریفر کر دیتے ہیں جہاں ان سے لاکھوں روپے بٹورنے کے بعد انتہائی غیر سنجیدگی سے آپریشن کرکے مریض کا بیڑہ غرق کرتے ہیں۔

ہسپتال میں کام کرنے والی ایک نجی تنظیم نے بتایا کہ غلط اور غیر ضروری آپریشنوں کا شکار سب سے زیادہ آرتھو پیڈ ک اور کڈنی کا مریض بنتے ہیں جن کو معمولی تکلیف کی صورت میں ڈاکٹر انتہائی سیریس قرار دے کر خوفزدہ کر دیتے ہیں اور فوری آپریشن نہ کروانے پر مریض کے مرنے کی پیش گوئی بھی کرنے سے باز نہیں آتے، مریض اور اہلخانہ ڈاکٹرز کی جانب سے خوفزدہ کئے جانے پر فوری آپریشن کیلئے ان کے نجی کلینک پہنچتے ہیں جہاں مریض اپنی جان اور اہلخانہ اپنے مال سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔

کڈنی کے ایک ڈاکٹر کے متعلق مریضوں نے بتایا کہ وہ ہر مسئلہ کا حل سرجری بتاتا ہے اور پیشاب میں معمولی رکاوٹ یا پتھری کی صورت میں ایسا علاج تجویز کرتا ہے جس سے مریضوں کو اندرونی انفیکشن ہو جاتا ہے اور وہ مستقل مریض بن کر ڈاکٹر کی کمائی کا ذریعہ بن جاتے ہیں۔

دوسری طرف ان مسیحا نما قصابوں کو چیک کرنے ، ان کی لوٹ مار روکنے کی ذمہ دار محکمہ صحت اور ضلعی انتظامیہ مکمل خاموشی کے ساتھ وقت گزار رہی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button