جہلم

مستقبل کے سہانے سپنے دکھا کرپڑھے لکھے نوجوانوں کو لوٹنے کا سلسلہ جاری

جہلم: مستقبل کے سہانے سپنے دکھا کرپڑھے لکھے نوجوانوں کو لوٹنے کا سلسلہ جاری ۔ سٹڈی ویزہ اور امیگریشن کے نام پر دھوکہ دہی کے ذریعے نوجوانوں سے لاکھوں بٹورے جانے لگے۔ شہریوں نے ڈی جی ایف آئی اے سے نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق جہلم شہر کے مختلف مقامات پر قائم پلازوں میں ایسے دفاتر قائم ہیں جوپڑھے لکھے ، آنکھوں میں سپنے سجائے نوجوانوں کو اپنے جال میں پھنسا کر بیرون ملک سٹڈی اور امیگریشن ویزوں کی فراہمی کا راگ آلاپ کر روزانہ لاکھوں روپے اینٹھ رہے ہیں ،سادہ لوح نوجوان مذکورہ غیر قانونی اداروں میں فیسوں کے نام پر بھاری رقم ادا کرکے انگلش لینگویج کورس کرتے ہیں ،جہاں بااثر مالکان انہیں پیپر آؤٹ کروا کر تمام سوالات بارے آگاہی فراہم کرنے کا لالچ دے کر مزید رقم بٹور لیتے ہیں۔

بیرون ملک جانے کے خواہش مند پڑھے لکھے نوجوان اپنے بہتر مستقبل کے سپنے آنکھوں میں سجائے ڈیمانڈ کی گئی رقم کی ادائیگی کیلئے کسی بھی حد سے گزرنے سے گریز نہیں کرتے ، مگر ویزہ اپلائی کرنے کی صورت میں انٹرویو کے دوران سوچی سمجھی سازش کے تحت نوجوانوں کو فیل کر دیا جاتا ہے اور دوبارہ نئے سرے سے کورس کرنے کا کہہ کر ٹرخا دیا جاتاہے اس طرح ضلع جہلم کے سینکڑوں نوجوان اپنی جمع پونجی لٹانے کے بعد خالی ہاتھ رہ جاتے ہیں۔

جہلم کے شہریوں نے چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیاہے کہ جہلم شہر وگردونواح میں قائم سٹڈی ویزوں کے نام پر قائم ہونے والے اداروں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے تاکہ ضلع جہلم کے نوجوانوں کو مافیا کی لوٹ مار سے بچایا جا سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button