حکومت طب یونانی و اسلامی کے فروغ کے لیے جدید ترین ریسرچ لیبارٹریز قائم کرے۔ محمد نسیم، اظہر نسیم

0

پنڈدادنخان: حکومت پاکستان طب یونانی و اسلامی کے فروغ کے لیے جدید ترین ریسرچ لیبارٹریز قائم کریں ملکی جڑی بوٹیوں سے علاج ایک قدیم ترین اور انتہائی موثر طریقہ علاج ہے جس کا کسی قسم کا سائیڈ ایفکٹ نہیں اگر ملکی جڑی بوٹیوں کے فروغ پر حکومت توجہ دے تو اربوں روپے کا ناصرف زرمبادلہ بچایا جاسکتا ہے بلکہ چین اور بھارت کی طرح ملکی ادویات برآمد کر کے بیرون ملک سے کروڑوں ڈالر کا زرمبادلہ قومی خزانے میں آسکتا ہے۔

یہ بات پاکستان طبی کانفرنس کے مرکزی رہنما پروفیسر حکیم محمد نسیم خان اور حکیم اظہر نسیم خان نے پنڈدادنخان میں رجسٹرڈ کوالیفائیڈ حکماء کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ بیرون ملک سے کروڑوں ڈالر کی ایلوپیتھک ادویات منگوا کر مسلسل ملکی خزانے پر بوجھ ڈالا جارہا ہے جبکہ ان ادویات کے سائیڈ ایفکٹ بھی بہت زیادہ سامنے آرہے ہیں جبکہ ملکی جڑی بوٹیوں سے طریقہ علاج ایک قدیم ترین موثر اور سستا طریقہ علاج ہے جو ہر طرح سے محفوظ بھی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک زرعی ملک ہے جس طرح قدرت نے پاکستان کو چاروں موسم عطا کئے ہیں اسی طرح پاکستان کے میدانی دریائی اور پہاڑی علاقوں میں قدرت نے بے بہا قیمتی جڑی بوٹیاں بھی پیدا کی ہیں جس سے مستفید ہو کر انسانی خدمت کی جاسکتی ہے اب مغربی دنیا بھی جڑی بوٹیوں کے علاج کی طرف توجہ دے رہی ہے اگر حکومت پاکستان ان ملکی اور قدرتی جڑی بوٹیوں پر جدید ریسرچ لیبارٹریز قائم کرے اور ان جڑی بوٹیوں سے تیار ادویات سے حکومت اربوں ڈالر کما کر قیمتی زرمبادلہ بچا سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نام و نہاد عطائیوں نان کوالیفائیڈ جعلی ڈاکٹروں کے خلاف جو کار وائی کر رہی ہے ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں لیکن نام و نہاد عطائیوں کے خلاف کاروائیوں کی آڑ میں رجسٹرڈ کوالیفائیڈ حکماء کو پریشان نہ کیا جائے بلکہ رجسٹرڈ کوالیفائیڈ حکماء کو بلاسود قرضے دئیے جائیں تاکہ وہ اپنے مطبوں کی حالت کو بہتر سے بہتر بنا سکیں حکومت کو چاہیے کہ وہ طب یونانی کی سرپرستی کرے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.