محکمہ صحت کی غفلت، جہلم کے مختلف میڈیکل سٹوروں میں کوالیفائیڈ عملہ غائب

0

جہلم: محکمہ صحت کی غفلت ، میڈیکل سٹوروں میں کوالیفائیڈ عملہ غائب، نان کوالیفائیڈ عملہ مریضوں کی ادویات میں ردو بدل کر کے امراض میں اضافے کاسبب بننے لگے، کم تعلیم یافتہ لڑکے مریضوں کے طبی نسخوں کو اپنی مرضی سے تبدیل کردیتے ہیں۔

نسخہ پر درج ادویات بدلنے سے مریضوں کی بیماریوں میں اضافہ ، میڈیکل سٹور مالکان قواعد و ضوابط کے مطابق میڈیکل سٹورز کی رجسٹریشن کے وقت لائسنس ہولڈر فارماسسٹ سمیت کوالیفائیڈ عملہ کو ضروری قرار دیا جاتاہے ،لیکن میڈیکل سٹور زمالکان کوکوالیفائیڈ عملہ رکھنے کے لئے بھاری معاوضہ اداکرنا پڑتا ہے۔

یہ ، مڈل ، میٹرک پاس لڑکوں کو سٹور پر کم تنخواہوں پر ملازم رکھ لیتے ہیں کوالیفائیڈ عملہ میڈیکل سٹور زمیں بھرتی کی بجائے کم معاوضے پر نان کوالیفائیڈ عملہ بھرتی کرکے ہر ماہ محکمہ صحت کے ڈرگ انسپکٹروں کو رشوت دینے کے بعد قانون کی خلاف ورزی کرنا قانونی حق سمجھتے ہیں ، دوسری جانب ہیلتھ کیئر کمیشن بھی کارروائی کرنے سے قاصر ہے۔

شہریوں نے چیف جسٹس آف پاکستان ، وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار ، صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد، کمشنر راولپنڈی ، ڈپٹی کمشنر جہلم سے نوٹس لینے اور کرپٹ عناصر کے خلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ کیاہے ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.