کنٹریکٹ اساتذہ کو مستقل کیا جائے، کنٹریکٹ میں توسیع قابل قبول نہیں ہوگی۔ احسان الٰہی شاکر

0

جہلم: ہم صرف کنٹریکٹ اساتذہ کی مستقلی چاہتے ہیں۔ مستقل کرنے کی بجائے ان کے کنٹریکٹ میں توسیع ہمیں کسی صورت میں قبول نہیںہوگی۔اس لیے ہم محکمہ تعلیم حکومت پنجاب سے مطالبہ کرتے ہیں کہ فوری طور پر پنجاب بھر کے تمام اساتذہ کو مستقل کیاجائے ورنہ جلد احتجاجی تحریک کے آغاز کا اعلان کیا جائے گا۔

ان خیالات کا اظہار پنجاب ٹیچرز یونین جہلم کے صدر احسان الٰہی شاکر نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کے دوران کیا۔ان کا کہنا تھا کہ ہم محکمہ تعلیم حکومت پنجاب کے اس فیصلے پر حیران ہیں کہ کنٹریکٹ اساتذہ کو مستقل کرنے کے بجائے ان کے کنٹریکٹ میں توسیع کی جائے گی۔

ان کا کہنا ہے کہ27اپریل 2018ء کو پنجاب اسمبلی سے ’’پنجاب ریگولرائیزیشن آف سروس ایکٹ 2018‘‘ کے نام سے ایک ایکٹ پاس ہوا تھا جس کے مطابق ان تمام کنٹریکٹ اساتذہ کو مستقل کردیا جائے گا جو 4سالہ کنٹریکٹ ملازمت مکمل کر لیں گے۔حکومت پنجاب کے سامنے شاید اس ایکٹ کی غلط تشریح پیش کی گئی ہے جس کی وجہ سے کنٹریکٹ اساتذہ کی مستقلی کے بجائے ان کے کنٹریکٹ میں توسیع کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کرتے ہیں کے پنجاب بھر کے تمام کنٹریکٹ اساتذہ کو فوری طور پر مستقل کیا جائے ورنہ دیگر تمام اساتذہ تنظیموں کے ساتھ مل کر جلد ضلعی اور صوبائی سطح پر بھرپور احتجاجی تحریک کے آغاز کا اعلان کیا جائے گا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.