جہلم

قانون کی بالادستی کے لیے کام کرنا ہمارے مشن میں شامل ہے۔ ڈی پی او جہلم سید حماد عابد

جہلم: قانون کی بالادستی کے لیے کام کرنا ہمارے مشن میں شامل ہے جسے ہم سائلین سے خوش اخلاقی کے ساتھ پیش آکر انہیں قانون اور میرٹ کے مطابق ریلیف دے کر کرسکتے ہیں۔
ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن سید حماد عابد نے اپنے ایک سالہ دور تعیناتی کے دوران کی گئی کارکردگی کے بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے کیا۔
انہوں نے کہا کہ محکمہ پولیس کے تمام افسران اور ملازمین پر اللہ کی طرف سے اس وقت نوازنے کا کام شروع ہوتا ہے جب وہ اپنے ضمیر اور اپنے اللہ کے سامنے جوابدہ ہو کر اپنا احتساب خود کریں کیونکہ جب ہم سب کا ایمان پختہ اور مکمل ہوگا تو چاہے وہ انتظامی آفیسر ہو یہ تفتیشی۔ بہتر تفتیش کرکے نہ صرف مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے بلکہ کسی بے گناہ کو اپنی ایف آئی آر مین شامل نہیں کریں گے۔
ڈی پی او سید حماد عابد نے بتایا کہ جب میں نے جہلم میں بحیثیت ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر چارج سنبھالاتو ضلع میں منشیات فروشی، ڈکیتی، قتل اور اغواء برائے تاوان جیسے معاملات درپیش تھے جس پر میں ایک ایسی حکمت عملی بنائی کہ تمام تحصیلوں کے ایس ڈی پی اوز اور تھانوں کے ایس ایچ اوز سے ان کے علاقوں میں ہونے والے کرائم کا تفصیلی ریکارڈ طلب کیا۔
ڈی پی او جہلم نے بتایا کہ حساس اداروں نے بھی تحقیق کرکے منشیات فروشوں کے علاقوں اور ان کے مکمل کوائف فراہم کئے جس پر جرائم پیشہ عناصر کے خلاف بھرپور کریک ڈاؤن کا آغاز کیا جس کے نتیجے میں چوری،ڈکیتی،راہبری اور کار اور موٹر سائیکل چوروں کے ساتھ ساتھ گھریلو سامان چوری میں ملوث تیس گینگز کے ایک سو تیس ممبران کو گرفتار کرکے 1کروڑ 74لاکھ43ہزار روپے کی رقم برآمد کرکے وارداتوں میں استعمال ہونے والا ناجائز اسلحہ بھی برآمد کیا۔
انہوں نے کہا کہ اسی طرح دو مقدمات اغواء برائے تاوان،پانچ اندھے قتل،دو مقدمات ڈکیتی،اکتیس مقدمات راہبری۔ دس مقدمات وہیکل چھیننا اور 63مقدمات گاڑیاں چوری کرنے کے مقدمات میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرکے نو کاریں،دس کیری ڈبے،اٹھاون موٹر سائیکل کے ساتھ ساتھ موبائیل فون کے ساتھ ساتھ دیگر اشیاء جن کی مالیت 2کروڑ 85لاکھ 58ہزار ہے برآمد کرکے ملزمان کے خلاف مقدمات درج کیے گئے۔
انہوں نے کہا کہ اسی طرح محلہ مغلاں،پنن وال تحصیل پنڈدادنخان سے شہباز حسین اغواء ہوا جبکہ اغواء کرنے والوں نے کال کرکے اس کی بازیابی کے لیے پانچ لاکھ روپے اس کے والد سے مانگے جس پر پولیس نے میری نگرانی میں علاقہ کے لوگوں کے ساتھ مل کر شہباز حسین کو 48گھنٹے میں بازیاب کرکے ملزمان کو گرفتار کیا جن کو عدالت نے عمر قید کی سزا دے دی ہے۔
ڈی پی او سید حماد عابد نے کہا کہ اغواء برائے تاوان کے مقدمہ میں عارف محمود کو نا معلوم ملزمان نے اغواء کرکے ایک لاکھ پونڈ کا مطالبہ کیا جس پر پولیس نے ایک جامع حکمت عملی کی تحت چھ ملزمان کو گرفتار کرکے ان سے عارف محمود کو بازیاب کروایا۔ اسی طرح چھ اندھے قتل جو ٹریس نہیں ہو رہے تھے ان پر سپیشل سکوارڈ بنا کر ان کے ملزمان کو گرفتار کرکے لوگوں کو ریلیف دیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگر عوام اور پولیس میں باہمی معاونت کا جذبہ بیدار ہو تو یقیناجرائم میں کمی آسکتی ہے جس کے لیے انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب ڈاکٹر شعیب دستگیر و ریجنل پولیس آفیسر،ڈی آئی جی سہیل حبیب تاجک کی ہدایت پر عوام اور پولیس میں رابطوں کو بہتر بنانے کے لیے اور فاصلوں کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ عوام میں اعتماد بحال کیا جا رہا ہے جس میں عوام کے ساتھ ساتھ علماء کرام اور معززین شہر برائی اور جرائم کے خاتمہ کے لیے اپنا بہتر کردار ادا کررہے ہیں۔
ڈی پی او جہلم نے کہا کہ ہر ہفتہ جمعہ کی نماز کی بعد ایس ڈی پی اوز،ایس ایچ اوز،چوکی انچارج اپنے اپنے علاقہ کی مساجد میں منشیات کے خاتمہ کے متعلق ایک جامع پولیسی سے نوجوانوں کے ساتھ ساتھ ان کے والدین کوآگاہ کرتے ہیں تاکہ وہ اپنی اولاد کو اس موزی ناسور سے محفوظ رکھ سکیں جبکہ اس ضمن میں انتہائی مثبت نتائج آنے شروع ہو گئے ہیں اور میں سمجھتا ہوں کہ یقینا اس کے دور س اثرات مرتب ہونگے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button