جہلم

ای او بی آئی کی طرف سے مزدوروں کے استحصال کا انکشاف، سینکڑوں پنشنرز پنشن کیلئے دربدر

جہلم: ای او بی آئی کی طرف سے مزدوروں کے استحصال کا انکشاف،ساری عمر فیکٹریوں ، بھٹوں، کارخانوں، دکانوں میں مزدوری کرکے محنت کش واجبات اورپنشن کے کیلئے دربدر، ارباب اختیار سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔
تفصیلات کے مطابق ایمپلائمنٹ اولڈ ایج بینی فٹ (ای او بی آئی)کی جانب سے ضلع بھر کے سینکڑوں مزدوروں کے استحصال کا انکشاف ہوا ہے ،محنت مشقت کرنے والے موجودہ تعداد سے کم ظاہر کرکے فیلڈ انسپکٹر ز ضلع جہلم کے صنعتی وتجارتی مراکز سے گٹھ جوڑ کئے ہوئے ہیں۔
ساری عمر فیکٹریوں ، کارخانوں، بھٹوں، دکانوں میں محنت مزدوری کرکے محنت کش واجبات اورپنشن کے حصول کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں،پنشن کیلئے آنیوالے محنت کشوں کو مختلف نجی اداروں کے مابین شٹل کاک بنادیاجاتا ہے ، ای او بی آئی کے ذمہ داران کی ذمہ داری میں شامل ہے کہ وہ صنعتی و تجارتی یونٹس کو رجسٹرڈ کرکے ان میں کام کرنے والے ملازمین کو ای او بی آئی کے کارڈز مہیا کریں۔
انتہائی باوثوق ذرائع کے مطابق مالکان اور ای او بی آئی حکام کی ملی بھگت سے سینکڑوں کی تعداد میں محنت کش اپنے حق اولڈایج بینی فٹ سے بھی محروم ہیں ، لیبر تنظیموں کے مطابق 70 فیصد مزدوراپنا بنیادی حق حاصل کرنے کیلئے دن رات ای او بی آئی کے دفاتر کے چکرلگاتے ہیں اور کئی کئی گھنٹے متعلقہ کلرک ان کی بات سننا ہی گوارہ نہیں کرتے جبکہ افسران کے ساتھ ملاقات سوچنا بھی دور کی بات ہے ۔
ضلع جہلم کے محنت کشوں نے ارباب اختیار سے مطالبہ کیاہے کہ ضلع جہلم میں واقع نجی فیکٹریوں ، کارخانوں ، بھٹوں ، دکانوں پر کام کرنے والے محنت کشوں کو ای او بی آئی کے ذمہ داران رجسٹرڈ کریں تاکہ عمر رسیدہ ہونے پر بڑھاپا الاؤنس مل سکے اور وہ اپنے بچوں کی باعزت طریقے سے کفالت کر سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button