جہلم

بھٹوں کا زہریلا دھواں اور تھریشروں سے پھیلنے والی گرد آلود ہوا لوگوں کیلئے کسی زہر قاتل سے کم نہیں۔ عوامی حلقے

جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں جاری کورونا کی لہر بھٹو ںکی چمنیوں سے نکلنے والا زہریلا دھواں رہائشی آبادیوں کے اندر لگے تھریشروں سے پھیلنے والی گرد آلود ہوا مقامی افراد کے لئے کسی زہر قاتل سے کم نہیں ، عوامی حلقوں کاکورونا کے درمیان بھٹوں کو بند کرنے اور آبادیوں سے دور تھریشر چلانے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر کی طرح جہلم شہر و گردونواح کے علاقوں میں بھی کورونا وائرس کی شدت میں غیر معمولی اضافہ ہو چکا ہے جس کی وجہ سے شہری احتیاطی تدابیر اختیار کر رہے ہیں لیکن دوسری جانب ضلع بھر میں موجود اینٹوں کے بھٹوں ، کسانوں کے تھریشرز سے اڑنے والی گردوغبار سے شہری بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں۔

شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ محکمہ ماحولیات کے افسران و اہلکاروں کو بھٹہ خشت کو زگ زیگ کی ٹیکنالوجی پر منتقل کروانے کے لئے سخت فیصلے کرنا ہونگے ، جبکہ آبادیوں سے ملحقہ جگہوں پر کسانوں کی طرف سے لگائے گئے تھریشرز پر بھی پابندی عائد کرنا ہوگی تا کہ آبادیوں کے مکین گردوغبار سے محفوظ رہ سکیں ، بھٹوں کی چمنیوں سے نکلنے والے دھوئیں اور تھریشرز سے نکلنے والی گردو غبار سے شہری سانس اور دمے کی بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button