جہلم

جہلم شہر میں تجاوزات کی بھرمار، ریڑھی بانوں نے شہریوں کا پیدل چلنا محال کر دیا

جہلم: اندرون شہر میں تجاوزات کی بھرمار ، ریڑھی بانوں نے شہریوں کا پیدل چلنا محال کر دیا، میونسپل کمیٹی کے ذمہ داران خاموش تماشائی، شہریوں نے ڈپٹی کمشنر سے نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق شہریوں کو رمضان المبارک کے دوران خریداری میں تجاوزات کے باعث مشکلات کا سامنا ،شہر کے مصروف ترین بازاروں جن میں مین بازار، مرغی بازار، نیابازار، کناری بازار ، دلہن بازار،تحصیل روڈ، ریلوے روڈ، سول لائن روڈاولڈ جی ٹی روڈ، قبرستان چوک ، محمدی چوک ، روہتاس روڈ، بلال ٹاؤن سمیت کالا گجراں میں تجاوزات کی بھرمار ہے۔

دکانداروں نے 4سے 5 فٹ دکان کے آگے خریدوفروخت کی اشیاء سجا رکھی ہیں، جس کی وجہ سے بازار سکڑ کر رہ گئے ہیں، ان بازاروں اور سڑکوں پر گاڑیاں، موٹرسائیکلیں چلنا تو دور کی بات شہریوں کا پیدل چلنا بھی محال ہوگیاہے، رمضان المبارک کے دوران شہریوں کی بڑی تعداد بازاروں سے خریداری کے لئے رْخ کرتی ہے ۔

شہریوں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میونسپل کمیٹی کی کارکردگی صفر ہے ، شہر سے تجاوزات ہٹائے جانے میں کوئی پیش رفت نہیں ہو سکی جس کے باعث خواتین کو خریداری میں شدید مشکلات پیش آرہی ہیں ، عید کی تیاریوں کے سلسلے میں خواتین کی بڑی تعداد نے صبح اور شام کے اوقات میں بازاروں کا رْخ اختیار کرنا شروع کررکھا ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ گرمی اور حبس کے ماحول میں رہی سہی کسر تجاوزات مافیا نے نکال دی ہے، مین بازار کے باہر تحصیل روڈ پر دن بھر ٹریفک کا جام رہنا روزانہ کا معمول بنچ چکا ہے ، غیر قانونی تجاوزات کے باعث ٹریفک کی روانی میں شدید مشکلات پیدا ہور ہی ہیں جبکہ ان بازاروں چوک چوراہوں پر بھی ریڑھی بانوں نے قبضے جما رکھے ہیں جس کے باعث روزانہ حادثات معمول بن چکے ہیں۔

شہریوں نے ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ شہر میں قائم ہونے والی تجاوزات کے خاتمے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button