جہلم

چوڑیوں اور مہندی کے بغیر خواتین کی عید پھیکی، شاپنگ سنٹروں میں چوڑیوں اورمہندیوں کے اسٹالز سج گئے

جہلم: چوڑیوں اور مہندی کے بغیر خواتین کی عید پھیکی معلوم ہوتی ہے ، ہاتھوں میں کھنکتی چوڑیوں اورمہندی کی خوشبو سے یہ تہوار مہک سا جاتا ہے، شاپنگ سنٹروں میں چوڑیوں کے اسٹالز سج گئے ہیں۔

چوڑیاں اور مہندی عید کا لازمی جزو ہیں اسی لئے عید قریب آتے ہی رنگ برنگی سٹائلش چوڑیوں کے سٹالز سے شاپنگ سنٹرز بھر چکے ہیں اگرچہ سٹائلش چوڑیاں بھی بازاروں میں موجود ہیں لیکن کانچ کی چوڑیاں ہر عمراور دور میں خواتین کے دلوں کو لبھاتی ہیں اور ہیرے کی مانند پرکشش دکھائی دیتی ہیں۔مہندی کے بغیر عید کا رنگ بھلا کیسے چڑھ سکتا ہے،بازاروں میں چوڑیوں کے ساتھ مہندی کے سٹال بھی سج چکے ہیں، سادہ مینا کاری ، گلیٹر، کندن، اور جڑاؤ رنگوں والی دلفریب چوڑیاں خواتین کی توجہ کا مرکز بنی ہوئی ہیں۔

خواتین کا کہنا ہے کہ ڈیزائننگ ہو یا سادہ عید پر حنا کی بھینی بھینی خوشبو تہوار کو چار چاند لگا دیتی ہے۔مہندی کا ایک پیکٹ ڈیڑھ سو روپے جبکہ چوڑیوں کے ایک سیٹ کی قیمت 1سو 20 روپے سے15 سو تک فروخت کی جارہی ہیں، اس کے ساتھ ہی بیوٹی پارلروں میں مہندی لگوانے کے نرخوں میں بھی اضافہ کر دیا گیا ہے ۔خواتین کا مزید کہناہے کہ عید کی تیاری مہندی لگوانے اور چوڑیاں پہنے بغیر ادھوری ہوتی ہے ، چوڑیاں اور مہندی عید کا لازمی جزو ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button