جہلماہم خبریں

محکمہ وائلڈ لائف کے ملازمین کا شکاریوں کے خلاف ایکشن، 1 ملزم گرفتار، نایاب نسل کے 2 ہرن برآمد

جہلم: محکمہ وائلڈ لائف کے ملازمین نے غیر قانونی شکار کرنے والے شکاریوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ایک ملزم کوڈرامائی انداز میں گرفتار کرکے اس کے قبضہ سے نایاب نسل کے 2 ذبح شدہ مادہ ہرن برآمد کرلیے۔
تفصیلات کے مطابق محکمہ وائلڈ لائف چیک پوسٹ جلالپورشریف پر تعینات وائلڈ لائف انسپکٹر محمد بشیر نے مخبر کی اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے LOA 7340 کار کوروکنے کی کوشش کی تو شاطر ڈرائیور نے گاڑی وائلڈ لائف ملازمین کے اوپر چڑھانے کی کوشش کی۔
محکمہ وائلڈ لائف اہلکاروں نے جان کی پرواہ کیے بغیر گاڑی کا پیچھا کرکے چند کلومیٹر کے فاصلے پر گاڑی روک لی جس پر گاڑی میں سوار 2 افراد گاڑی سے اتر کر بھاگ نکلے جبکہ گاڑی کے ڈرائیور کو وائلڈ لائف کے اہلکاروں نے ڈرامائی انداز میں گرفتار کر لیا، دوران تلاشی گاڑی کی میں سے 2ذبحہ شدہ نایاب نسل کے مادہ اڑیال برآمد ہوئے۔
وائلڈ لائف انسپکٹر محمد بشیر کا کہنا ہے کہ وائلڈ لائف اہلکاروں نے ذبح شدہ مادہ اڑیال تحویل میں لے کر تینوں نامزد ملزمان راجہ سجاد ساکن چک شادمان،راجہ بلال ساکن کوہالہ،انور ساکن کسلیاں پنڈدادنخان کے خلاف غیر قانونی شکار کرکے فروخت کرنے کی دفعات کے تحت تھانہ چوٹالہ میں مقدمہ درج کروا دیا ہے۔
واضح رہے کہ راجہ سجاد اور راجہ بلال بدنام زمانہ شکاری ہیں جو اکثر اوقات نایاب نسل کے جانوروں کاشکار کرکے بھاری رقم کے عوض فروخت کردیتے ہیں اور ان کا یہی ذریعہ معاش ہے جس کی وجہ سے نایاب نسل کے جانور اڑیال کی نسل کشی ہورہی ہے۔
علاقہ مکینوں نے ڈی جی وائلڈ لائف پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ نایاب نسل کے جانوروں کی نسل کشی میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لا کر نشان عبرت بنایاجائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button