جہلماہم خبریں

سامعہ شاہد قتل کیس میں ملوث ملزم چوہدری شاہد انتقال کر گیا

جہلم: پاکستانی نژاد برطانوی شہری سامعہ شاہد کے قتل کیس میں ملوث ملزم چوہدری شاہد انتقال کر گیا۔

متوفی مقتولہ کا والد ہےجو ضمانت پر رہا ہواتھا ۔متوفی دل اور شوگر کے عارضہ میں مبتلا تھا،موت ہارٹ اٹیک کے باعث ہوئی۔

متوفی مقتولہ کا والد ہےجو ضمانت پر رہا ہواتھا
پاکستانی نژاد برطانوی شہری سامعہ شاہد کو ڈیڑھ سال قبل دینہ کےنواحی علاقہ پنڈوڑی میں والد اور خاوند نے مبینہ طور پر غیرت کے نام پر قتل کیا تھا۔مقتولہ کا پہلا شوہر جیل میں ہے ،مقدمہ کا ٹرائل جاری ہے۔

یاد رہے کہ بریڈ فورڈ سے تعلق رکھنے والی 28 سالہ بیوٹی تھراپسٹ سامعہ کی پہلی شادی ان کے کزن چوہدری شکیل سے ہوئی تھی تاہم دونوں کے درمیان مئی 2014 میں طلاق ہوگئی تھی۔

بعدازاں خاتون نے ٹیکسلا سے تعلق رکھنے والے سید مختار کاظم سے ستمبر 2014 میں شادی کی اور دونوں نے دبئی میں رہائش اختیار کرلی۔

20 جولائی کو سامعہ کے شوہر مختار کو فون پر اطلاع ملی کہ ان کی اہلیہ کا انتقال ہوگیا ہے۔

28 سالہ سامعہ شاہد کے شوہر سید مختار کاظم نے الزام عائد کیا تھا کہ ان کی اہلیہ کو ان کے خاندان والوں نے اپنی پسند سے شادی کرنے پر نام نہاد غیرت کے نام پر قتل کیا۔

برطانوی نژاد کے قتل کے الزام میں والد، والدہ، کزن، بہن اور سابق شوہر سمیت پانچ افراد کے خلاف مقدمہ درج ہوا تھا انویسٹی گیشن ٹیم نے والد اور سابق شوہر کو ملوث قرار دے کر دیگر کو بے گناہ کر دیا تھا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button